Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / ماموں نے سیکل پر بھانجی کی نعش کو منتقل کیا

ماموں نے سیکل پر بھانجی کی نعش کو منتقل کیا

سات ماہ کی لڑکی کی دوران علاج موت، ایمبولنس کی فراہمی میں غفلت
کوشمبی (یو پی) ۔ 13 جون (سیاست ڈاٹ کام) اڈیشہ کے دانا ماجی جیسے افسوسناک واقعہ کا اترپردیش میں اعادہ ہواجس میں ایک ماموں نے اپنی سات ماہ کی بھانجی کی نعش کو کئی میل کے فاصلہ تک سیکل پر منتقل کیا۔ کوشمبی ڈسٹرکٹ ہاسپٹل میں یہ لڑکی دوران علاج فوت ہوگئی۔ بعدازاں ایمبولنس کیلئے متعدد مرتبہ درخواست کے باوجود کسی نے کوئی توجہ نہیں دی اور مجبورا ماموں کو اپنی بھانجی کی نعش سیکل کے ذریعہ منتقل کرنا پڑا۔ تفصیلات کے مطابق سات ماہ کی پونم جو یومیہ اجرت پر مزدوری کرنے والے اننت کمار کی بیٹی تھی، دست و قئے کی شکایت پر دو دن قبل اس دواخانہ میں شریک کی گئی تھی۔ بعدازاں اس کا باپ پیسوں کا انتظام کرنے کی غرض سے الہ آباد روانہ ہوگیا تھا اور اپنے برادر نسبتی برج موہن سے بھانجی کی دیکھ بھال کرنے کیلئے کہا تھا۔ برج موہن نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ ’’میری بھانجی گذشتہ روز دوران علاج فوت ہوگئی۔ حکام سے متعدد مرتبہ درخواست کے باوجود نعش لے جانے کیلئے ایمبولنس یا کسی گاڑی کا انتظام نہیں کیا گیا اور مجھے کسی سے سیکل حاصل کرتے ہوئے تقریباً 10 کیلو میٹر دور بھانجی کی نعش منتقل کرنا پڑا‘‘۔ کوشمبی دواخانہ کے چیف میڈیکل افسر ایس کے اپادھیائے نے رابطہ کرنے پر کہا کہ اس واقعہ کا نوٹ لیا گیا ہے اور تحقیقات کی جارہی ہیں۔ خاطی کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT