Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ماویسٹوں نے ٹی آر ایس کے 6 قائدین کو رہا کردیا

ماویسٹوں نے ٹی آر ایس کے 6 قائدین کو رہا کردیا

پڑوسی ریاست چھتیس گڑھ سے بحفاظت مکانات کو واپسی
حیدرآباد ۔ 21 ۔ نومبر : ( پی ٹی آئی ) : ضلع کھمم کے 6 ٹی آر ایس لیڈروں کو آج رہا کردیا گیا ۔ جنہیں 2 یوم قبل ماویسٹوں نے پڑوسی ریاست چھتیس گڑھ میں یرغمال بنالیا تھا ۔ بھدرا چلم سب ڈیوژن ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ پولیس مسٹر آر بھاسکرن نے بتایا کہ مغویہ تمام 6 لیڈروں کو آج رہا کردیا گیا اور بحفاظت اپنے مکانات پہنچ گئے ہیں ۔ ٹی آر ایس بھدرا چلم اسمبلی حلقہ کے انچارج رام کرشنا دیگر 5 قائدین چہارشنبہ کی شام ضلع کھمم میں چرلہ منڈل کے موضع پسوگپا گئے ہوئے تھے ۔ یہ گاوں چھتیس گڑھ کی سرحد سے 5 کلومیٹر دور واقع ہے ۔ جہاں پر ماویسٹوں نے 6 ٹی آر ایس قائدین ایم رام کرشنا ، پسوگپا سابق سرپنچ او رام کرشنا ٹی آر ایس چرلہ منڈل سابق صدر ، پٹیل وینکٹیشور راؤ سابق سکریٹری ٹی آر ایس سنتا پوری سریش ، وجیڈو منڈل پارٹی صدر ڈی جناردھن اور وینکٹاپورم منڈل سکریٹری ٹی آر ایس ڈی ستیہ نارائنا کو طلب کر کے یرغمال بنالیا تھا ۔ بعد ازاں پولیس کو یہ اطلاع موصول ہوئی کہ ماویسٹوں نے بعض مسائل پر بات چیت کے لیے ٹی آر ایس کے لیڈروں کو طلب کیا اور انہیں محروس بنالیا ۔ تاہم پولیس سپرنٹنڈنٹ ضلع کھمم شاہنواز قاسم نے کہا تھا کہ اس واقعہ کو اغواء یا یرغمال سے تعبیر نہیں کیا جاسکتا۔ سی پی آئی ( ماویسٹ ) کے نام سے ایک مکتوب میں یہ وضاحت کی گئی کہ 6 قائدین خود ہمارے پاس آئے تھے اور ہم نے ان سے بات چیت کی ہے ۔ اس مکتوب میں نکسلائٹس نے تلنگانہ حکومت پر عوام دشمن پالیسیاں اختیار کرنے کا الزام عائد کیا اور ضلع ورنگل میں ماہ ستمبر میں پولیس کے ساتھ تصادم میں 2 ماویسٹوں کی ہلاکت کو فرضی انکاونٹر قرار دیا اور پولیس کی تلاشی مہم بھی روک دینے کا مطالبہ کیا

TOPPOPULARRECENT