Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ماں تو ماں ہے ۔ بیٹے کو ماں کا گردہ

ماں تو ماں ہے ۔ بیٹے کو ماں کا گردہ

جناب زاہد علی خاں کی ترغیب پر ایک لاکھ روپئے کی امداد
حیدرآباد ۔ 6 ۔ مئی : ( نمائندہ خصوصی ) : ماں ، انسان کے لیے قدرت کا بہترین تحفہ ہے وہ اپنی اولاد کے لیے خدا کی رحمت اس کی نعمت سکون و راحت ہے ، دنیا میں ماں جیسی عظیم ہستی کی محبت و شفقت کا کوئی نعم البدل نہیں ، ماں اپنا سکون و چین برباد کر کے اولاد کے چین و قرار کا سامان کرتی ہے ۔ خود جاگ جاگ کر راتیں گذار کر اپنے بچوں کو بڑے آرام سے سلاتی ہے خود بھوکی رہ کر اپنے بیٹے بیٹیوں کو پیٹ بھر کر کھلاتی ہے ۔ غرض ماں اپنے بچوں کی خوشیوں کے لیے اپنی تمام خوشیوں کی قربانیاں دے دیتی ہے ۔ اولاد کا درد ماں اپنے جسم میں محسوس کرتی ہے ۔ اس ماں کے بارے میں ہمارے نبی کریم ؐکا ارشاد مبارک ہے ’ تمہارے حسن سلوک کی سب سے زیادہ حقدار تمہاری ماں ہے تمہاری ماں ہے ، تمہاری ماں ہے اور پھر تمہارا باپ ‘ ۔ قارئین … ماں اپنے جگر کے ٹکرے یعنی بیٹا یا بیٹی کے لیے اپنے جگر کا ٹکڑا دے دیتی ہے انہیں اگر خون کی ضرورت پڑ جائے تو وہ اپنے لہو کا ایک ایک قطرہ دینے کے لیے تیار ہوجاتی ہے ۔ آج ہم آپ کی ایک ایسی ماں سے ملاقات کراتے ہیں جو اپنے جواں بیٹے کی زندگی بچانے کے لیے اسے ایک گردہ کا عطیہ دے رہی ہے اور اس ماں کی مدد کے لیے ہمیشہ کی طرح اس مرتبہ بھی ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں آگے آئے ، سیاست ڈاٹ کام پر اس باحوصلہ ماں کے انٹرویو دیکھنے کے بعد کئی لوگوں کی آنکھوں سے آنسو رواں ہوگئے ۔ ایسے ہی لوگوں میں فیض عام ٹرسٹ کے سکریٹری و خازن جناب افتخار حسین بھی شامل ہیں ۔ انہوں نے اپنے بچے کے تئیں ماں کی تڑپ دیکھ کر ایک لاکھ روپئے بطور عطیہ پیش کئے ۔ جناب زاہد علی خاں صاحب کی موجودگی میں ہی دفتر سیاست میں انہوں نے یہ خطیر رقم مرزا عظیم بیگ اور ان کی ضعیف والدہ ملکہ بیگم کے حوالے کی ۔ ملکہ بیگم نے روتے ہوئے بتایا کہ ان کے فرزند مرزا عظیم بیگ مہاراجہ پگڑی میں ماہانہ 10 ہزار روپئے کی تنخواہ پر کام کیا کرتے تھے وہ دو لڑکیوں اور ایک لڑکے کے باپ ہیں اور پچھلے تین برسوں سے گردہ کے عارضہ میں مبتلا ہیں ۔ ان کے دونوں گردہ ناکارہ ہوچکے ہیں جس پر ڈاکٹروں نے انہیں گردہ کی پیوندکاری کا مشورہ دیا ۔ وہ فی الوقت ڈائیلاسیس پر ہیں ۔ گردہ کی پیوندکاری اور علاج و معالجہ پر ڈاکٹروں نے جملہ 8.30 لاکھ روپئے کے مصارف بتائے ہیں ۔ ایک پریشان حال ماں اور اس کے بیمار بیٹے کے لیے اس قدر کثیر رقم جمع کرنا محال ہے ۔ ایسے میں فیض عام ٹرسٹ کے جناب افتخار حسین نے ملکہ بیگم اور ان کے بیٹے کو ایک لاکھ روپئے کا عطیہ دیتے ہوئے انسانی ہمدردی کی بہترین مثال قائم کی ۔ ویسے بھی فیض عام ٹرسٹ نے سیاست ملت فنڈ کے ساتھ مل کر نہ صرف حیدرآباد بلکہ مظفر نگر ، یو پی ، کشمیر ، جھارکھنڈ وغیرہ کے مظلوم مسلمانوں کی بھر پور مدد کی ہے ۔ ان کے لیے تعلیمی ادارے اور ٹیکنیکل انسٹی ٹیوٹ قائم کئے گئے ۔ ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں نے ملکہ بیگم کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ملکہ بیگم نے اپنے بیٹے کی زندگی بچانے کے لیے اپنا گردہ دینے کی جو پیشکش کی ہے اس کے لیے وہ انہیں سلام کرتے ہیں ۔ جواب میں ملکہ بیگم نے ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں اور فیض عام ٹرسٹ کے ذمہ داروں کے حق میں دعا کرتے ہوئے کہا کہ وہ زندگی بھر ان لوگوں کے لیے دعاگو رہیں گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT