Saturday , September 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ماں جیسی پارٹی کو دھوکہ دینا نامناسب عمل

ماں جیسی پارٹی کو دھوکہ دینا نامناسب عمل

ونپرتی۔24 فبروری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع ورنگل سے تعلق رکھنے والے کانگریس پارٹی کے سینئر قائدو سابق وزیر بسوا راج ساریا کی ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرنا ماں کو دھوکہ دینے کے مترادف ہے ۔ ان خیالات کا اظہار اے آئی سی سی ریاستی سکریٹری ایم ایل اے ونپرتیڈاکٹر جی چنا ریڈی نے کیا ۔ آج مستقر ونپرتی کے پنچایت راج گیسٹ ہاؤز میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بسوا راج ساریا کو کانگریس پارٹی نے ہر اعتبار سے نوازا ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کی تشکیل اور جدوجہد میں وہ میرے ساتھ شریک رہے ۔ کانگریس پارٹی صدر سونیا گاندھی ہمارے اوپر اعتماد کرتے ہوئے تلنگانہ کی تشکیل میں کئی رکاوٹیں ہونے کے باوجود آندھرا میں پارٹی کو شدید نقصان ہونے کے باوجود تلنگانہ کی تشکیل کی ہے ۔ تلنگانہ کی تشکیل کے بعد انتخابات میں کانگریس پارٹی کو اقتدار سے محروم ہونا پڑا ۔ پارٹی کو مضبوط کرنے کے وقت ماں جیسی پارٹی کو دھوکہ دے کر ٹی آر ایس میں شامل ہونا یہ ساریا کیلئے نامناسب ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر صرف ہتھیلی میں چمتکار کررہے ہیں ۔ یہ صرف چمتکار ہے اصل میں کچھ نہیں ہورہا ہے ۔ چمتکار کو دیکھ کر قائدین ٹی آر ایس میں شامل ہورہے ہیں ۔ دراصل دو سال کے عرصہ میں ٹی آر ایس حکومت عوام کی بھلائی کیلئے کچھ بھی نہیں کیا ۔ انہوں نے کانگریس پارٹی کے قائدین سے اپیل کی کہ وہ پارٹی کو مضبوط کرنے اور آئندہ انتخابات میں ٹی آر ایس پارٹی کو سبق سکھانے کیلئے جدوجہد کریں ۔ اس موقع پر کانگریس پارٹی قائدین ایم پی پی شنکر نائیک‘ کونسلر چنگلا کرشنیا ‘ وجئے لکشمی ‘ رادھا کرشنا ‘ محمد بابا ‘ شام کمار کے علاوہ دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT