Monday , August 21 2017
Home / دنیا / ’متحدہ عرب امارات نے قطر کے سرکاری ویب سائیٹ کی ہیکنگ کی تھی‘

’متحدہ عرب امارات نے قطر کے سرکاری ویب سائیٹ کی ہیکنگ کی تھی‘

23 مئی کو منصوبہ بندی، دوسرے دن ویب سائیٹ پر من گھڑت خبر کے بہانے برادر ملک سے سفارتی تعلقات منقطع
واشنگٹن ۔ 17 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) خبروں کی ساکھ و صداقت کے اعتبار سے عالمی سطح پر معروف امریکی روزنامہ واشنگٹن پوسٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات نے ماہ مئی میں حکومت قطر کی سرکاری ویب سائیٹ کی ہیکنگ کرتے ہوئے اس پر ایک جھوٹی کہانی پیش کی تھی اور اس کہانی کو قطر اور مختلف عرب ممالک کے درمیان جاری تنازعہ کیلئے ایک بہانے کے طور پر استعمال کیا تھا۔ تاہم واشنگٹن میں متحدہ عرب امارات کے سفارتخانہ نے واشنگٹن پوسٹ کی اس رپورٹ کے جواب میں جاری کردہ ایک بیان میں اس اطلاع کو غلط قرار دیا او راصرار کیا کہ مبینہ ہیکنگ میں خواہ کچھ بھی ہو متحدہ عرب امارات کا کوئی رول نہیں ہے۔ رپورٹ نے امریکی انٹلیجنس کے بعض عہدیداروں کے حوالے سے کہا کہ اماراتی حکومت کے سینئر ذمہ داروں نے 23 مئی کو اس منصوبہ پر تبادلہ خیال کیا تھا جس کے دوسرے ہی دن قطر نیوز ایجنسی کی ویب سائیٹ پر امیر قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی کی تقریر کا حوالہ دیا گیا تھا جس میں انہوں نے مبینہ طور پر ایران کی ستائش کی تھی اور کہا تھا کہ اسرائیل کے ساتھ قطر کے بہتر تعلقات ہیں۔ بعدازاں قطری خبر رساں ادارہ کے ٹوئیٹر پر ایسے ہی من گھڑت بیانات منظرعام پر آئے۔ تاہم اس خبر رساں ادارہ نے فوری دعویٰ کیا کہ اس کی ویب سائیٹ ہیک کرلی گئی ہے اور جلد ہی اس فرضی مضمون کو حذف کردیا گیا تھا لیکن سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر نے اپنے چیلنجوں میں قطری ذرائع ابلاغ کو مکمل طور پر روک دیا۔ بعدازاں سفارتی تعلقات بھی منقطع کرلئے گئے۔ اس علاقہ میں جاری بحران سے اسلامک اسٹیٹ کے خلاف امریکہ کی قیادت میں جاری لڑائی میں پیچیدگیاں پیدا ہونے کا خطرہ لاحق ہوگیا ہے کیونکہ اس میں حصہ لینے والے تمام ملک امریکہ کے حلیف اور مخالف داعش اتحاد کے ارکان ہیں۔ قطر میں امریکہ کے 10,000 فوجی تعینات ہیں اور قدرتی گیس کی بے پناہ دولت سے مالامال یہ چھوٹا سا خلیجی ملک امریکی سنٹرل کمانڈ کا علاقائی ہیڈکوارٹر بھی ہے جبکہ ایک او رچھوٹے خلیجی ملک بحرین میں امریکی بحریہ کا پانچواں بیڑہ موجود ہے۔ امریکہ کے صدر اس بحران میں سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی پرزور طرفداری کررہے ہیں اور اعلانیہ طور پر سعودی و امارات کے اس دعویٰ کی تائید کررہے ہیں کہ قطر اسلامی عسکریت پسند گروپوں کا حامی و مددگار ہے اور مشرق وسطیٰ میں عدم استحکام پیدا کرنے والی طاقت ہے۔ امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن نے خلیج میں کئی دن تک مصالحتی مساعی کی تھی لیکن اس کا کوئی مثبت نتیجہ برآمد نہیں ہوسکا۔

TOPPOPULARRECENT