Wednesday , September 20 2017
Home / عرب دنیا / متحدہ عرب امارات کیلئے ہندوستانی آموں کی برآمد متاثر

متحدہ عرب امارات کیلئے ہندوستانی آموں کی برآمد متاثر

ابوظہبی ؍ ممبئی ۔ 24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) پھلوں کے راجہ آم کو دنیا کے ہر گوشے میں پسند کیا جاتا ہے جبکہ ہندوستان میں آموں کی بہت زیادہ اقسام پائی جاتی ہیں اور انہیں بیرون ملک برآمد بھی کیا جاتا ہے۔ متحدہ عرب امارات بھی ہندوستانی آموں کا خریدار ہے لیکن بھلا ہو کاربائیڈ استعمال کرنے والوں کا جنہوں نے پھلوں کے خالص ہونے کو بھی شکوک و شبہات میں مبتلاء کردیا۔ کاربائیڈ کے استعمال سے آموں کو پکایا جارہا ہے لیکن اب متحدہ عرب امارات نے ہندوستانی آموں کو خریدنے سے یہ کہہ کر انکار کردیا ہیکہ پھلوں کی کھیپ میں زہریلی ادویات کا تناسب مقرر کردہ تناسب سے زیادہ ہے جو صحت کیلئے نقصاندہ ثابت ہوسکتا ہے۔ متحدہ عرب امارات کی وزارت موسمی تغیر و ماحولیات نے انتباہ جاری کیا ہیکہ ہندوستانی مارکٹس سے 70 فیصد آموں کو خریدا جاتا ہے۔ عہدیداروں کا کہنا ہیکہ آم کے علاوہ لال مرچ، کالی مرچ اور ککڑی (کھیرا)، کی کھیپوں میں بھی زہریلی ادویات کی مقدار مقرر کردہ مقدار سے زائد پائی گئی ہے۔ اگریکلچرل اینڈ پراسیسڈ فوڈ پراڈکٹس ایکسپورٹ ڈیولپمنٹ اتھاریٹی (Apeda) کے ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ ہم نے متعلقہ برآمد کنندگان کو ایک تجویز روانہ کی ہے۔ علاوہ ازیں ترکاری کے تمام برآمد کنندگان کے رجسٹریشن کے عمل کا بھی آغاز کیا گیا ہے۔ لہٰذا توقع کی جاسکتی ہیکہ حالات جلد ہی قابو میں آجائیں گے۔ یاد رہیکہ ہندوستانی آموں کی برآمد کو گذشتہ چار سال سے مسائل درپیش ہیں جس سے آموں کی برآمد کی مقدار شدید طور پر متاثر ہوئی۔ 2011-12ء کے دوران 63,594 ٹن تازہ آم برآمد کئے گئے جبکہ یہی مقدار 2014-15ء میں گھٹ کر 43,191 ٹن رہ گئی۔

TOPPOPULARRECENT