Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / متنازعہ اسکالر ذاکر نائک کا پاسپورٹ منسوخ کردیا گیا

متنازعہ اسکالر ذاکر نائک کا پاسپورٹ منسوخ کردیا گیا

ممبئی 18 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) وزارت امور خارجہ نے متنازعہ اسکالر ذاکر نائک کا پاسپورٹ منسوخ کردیا ہے جو مبینہ طور پر دہشت گردی کی فنڈنگ اور منی لانڈرنگ کے مقدمات میں مطلوب ہیں۔ این آئی اے کے ایک ترجمان نے بتایا کہ ممبئی ریجنل پاسپورٹ آفس نے این آئی اے کی جانب سے ذاکر نائک کے پاسپورٹ کو منسوخ کرنے کی درخواست کو منظوری دیدی ہے ۔ 51 سالہ اسکالر ذاکر نائک کے خلاف قومی تحقیقاتی ایجنسی ( این آئی اے ) کی جانب سے مبینہ طور پر دہشت گردی کی فنڈنگ اور منی لانڈرنگ کے الزامات کی تحقیقات کی جا رہی ہے ۔ ذاکر نائک فی الحال بیرون ملک ہیں۔ ممبئی سے کام کرنے والے ذاکر نائک یکم جولائی 2016 کو ہندوستان سے روانہ ہوئے تھے اور ڈھاکہ کے ایک کیفے میں ہوئے حملے میں مبینہ طور پر ملوث کچھ دہشت گردںوں کی جانب سے ان کا نام لئے جانے کے بعد سے وہ سکیوریٹی ایجنسیوں کی تحقیقات کے دائرہ میں ہیں۔ ذاکر نائک کے پاسپورٹ کی گذشتہ سال جنوری میں تجدید ہوئی تھی اور وہ 10 سال کیلئے کارکرد تھا ۔ این آئی اے نے 18 نومبر 2016 کو ذاکر نائک کے خلاف اپنی ممبئی برانچ میں ایک مقدمہ تعزیرات ہند کی مختلف دفعات اور انسداد غیر قانونی سرگرمیان قانون کے تحت مقدمہ درج کیا تھا ۔ ممبئی سے کام کرنے والی ان کی این جی او اسلامک ریسرچ فاونڈیشن کو بھی غیر قانونی قرار دیدیا گیا ہے ۔ ذاکر نائک پر الزام ہے کہ وہ اپنی اشتعال انگیز تقاریر سے نفرت پھیلاتے ہیں۔ دہشت گردوں کو فنڈنگ کرتے ہیں اور انہوں نے کئی برسوں میں کروڑہا روپئے کی منی لانڈرنگ کی ہے ۔ ذاکر نائک نے بیرون ملک سے ہی ہندوستانی ذرائع ابلاغ سے بات چیت میں بارہا ان الزامات کی تردید کی ہے ۔ پاسپورٹ آفس نے انہیں نوٹس وجہ نمائی جاری کرتے ہوئے سوال کیا تھا کہ ان کا پاسپورٹ کیوں نہیں منسوخ کیا جانا چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT