Thursday , September 21 2017
Home / جرائم و حادثات / متھوٹ فینانس میں ڈاکہ کی ناکام کوشش کا کیس

متھوٹ فینانس میں ڈاکہ کی ناکام کوشش کا کیس

7 رکنی ٹولی کے چار ارکان گرفتار ۔ 3 کی تلاش جاری
حیدرآباد /21 جولائی ( سیاست نیوز ) سائبرآباد پولیس نے بالاآخر ڈاکوں کی اس ٹولی کو گرفتار کرلیا جس نے متھوٹ فینانس میں ڈاکہ کی ناکام کوشش کی تھی ۔ پولیس نے اس سات رکنی ٹولی کے 4 افراد کو گرفتار کرلیا اور تین مفرور بتائے گئے ۔ جوائنٹ کمشنر پولیس سائبرآباد مسٹر شاہنواز قاسم نے ایک پریس کانفرنس کے دوران گرفتار افراد کو پیش کیا تاہم ٹولی اصل سرغنہ پولیس کی گرفت سے باہر ہے ۔ جوائنٹ کمشنر نے بتایا کہ 28 سالہ ارشد فواد مودین خان ساکن ماروے بیچ ممبئی 30 سالہ شفیع نواب الدین سید ساکن عثمان آباد 35 سالہ سنتوش دثرتھ ویرکر ساکن عثمان آباد اور 55 سالہ محمد دستگیر ساکن بنڈلہ گوڑہ چندرائن گٹہ کو گرفتار کرلیا جبکہ فاروق ، انا اور ٹولی کا اصل سرغنہ شریف مفرور ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے قبضہ سے چاقو ، کتہ ، لوہے کے سلاخ چار سیل فون ایک کار کو ضبط کرلیا گیا ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ڈاکہ کی ناکام کوشش اور ہیپی ہوم میں کار کی دستیابی کے بعد کارروائی میں پولیس کو کچھ ہاتھ نہیں آیا اور ان ڈاکووں کی گرفتاری کیلئے مضبوط سراغ دستیاب نہیں تھا۔ صرف ایک پالیتھین کور کی مدد سے پولیس ڈاکووں کے تعاقب میں تھی اور پولیس کامیاب رہی ۔ شاہنواز قاسم نے بتایا کہ اس ٹولی کے ارکان نے جیل میں ڈکیتی کا منصوبہ تیار کیا تھا ۔ ٹولی کا نمبر سرغنہ شریف اور ارشد کو سال 2008 میں ڈکیتی کے معاملہ میں جیل منتقل کیا گیا تھا اور وہاں ان کی ملاقات شفیع نواب الدین سے ہوئی ۔ انہوں نے جیل میں ڈکیتی کا منصوبہ تیار کرلیا اور رہائی کے بعد گجرات سے ٹویرا گاڑی کا سرقہ کیا جسکے بعد 6 افراد نے کئی مرتبہ حیدرآباد کا دورہ کیا اور جائزہ لیا ۔ ان کی نظر متھوٹ فینانس دفاتر پر رکی تھی اور انہوں نے سیکوریٹی کی کمی کی اساس پر مائیلاردیوپلی میں سرقہ کا منصوبہ تیار کیا اور آپریشن شروع کیا ۔ تاہم ناکامی کے بعد انہوں نے مسروقہ کار کو ہیپی ہوم اپارٹمنٹ میں چھوڑ کر اپنے اپنے راستے نکل گئے ۔ پولیس نے بتایا کہ مفرور ڈاکؤں کو بہت جلد گرفتار کرلیا جائے گا ۔

 

TOPPOPULARRECENT