Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / مجاہد پور تالاب کی قطب شاہی مسجد کو مندر ثابت کرنے کی سازش

مجاہد پور تالاب کی قطب شاہی مسجد کو مندر ثابت کرنے کی سازش

تحریر پر دستخط کیلئے مقامی مسلمانوں پر دباؤ ، پولیس کی موجودگی میں مسجد میں کُم کُم کا چھڑکاؤ
حیدرآباد ۔ 9 ۔ اکٹوبر : ( نمائندہ خصوصی ) : شہر سے 85 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع مجاہد پور تالاب کے بیچوں بیچ موجود 500 سالہ قدیم قطب شاہی مسجد کو مندر میں تبدیل کرنے کے لیے فرقہ پرست جان توڑ کوشش کررہے ہیں ۔ 3 جنوری کو اس سلسلہ میں خصوصی رپورٹ شائع ہوئی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ موضع مجاہد پور منڈل کلکاچیرلہ ضلع رنگاریڈی کے تالاب میں موجود 500 سالہ قدیم قطب شاہی مسجد کی گنبد پر زعفرانی جھنڈا لہرایا گیا ہے ۔ مسجد کمیٹی اور مقامی مسلمانوں کے ساتھ ساتھ صدر دکن وقف پروٹیکشن سوسائٹی عثمان بن محمد الہاجری نے احتجاج کرتے ہوئے پولیس سے رجوع ہو کر اس زعفرانی پرچم کو وہاں سے نکلوانے لگایا لیکن افسوس اس بات پر ہے کہ پولیس پلٹ کی تعیناتی کے باوجود اب مقامی مسلمانوں کو ڈرا دھمکا کر اور ان پر دباؤ ڈالتے ہوئے مسجد کے اندرونی حصہ میں کُم کُم اور گیرو کا چھڑکاؤ کیا گیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ پنچایت بٹھا کر مسلمانوں سے اس تحریر پر دستخط لی گئی جس میں لکھا گیا کہ یہ اتماں گڈی ہے ۔ عثمان بن محمد الہاجری اور ان کے ساتھیوں نے بتایا کہ مسجد کمیٹی کے صدر محمد عظمت اور ان کے ساتھیوں کو ڈرایا دھمکایا جارہا ہے ۔ ان کا سماجی مقاطعہ کیا جارہا ہے ۔ جس سے مجاہد پور کے مقامی مسلمانوں میں خوف و دہشت کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ عثمان بن محمد الہاجری کے مطابق اس گاؤں میں مسلمانوں کے 40 مکانات ہیں ۔ قطب شاہی مسجد کو مندر بنانے کی کوششوں کی شدید مخالفت کرتے ہوئے ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کی ہدایت پر دکن وقف پروٹیکشن سوسائٹی نے سی ای او وقف بورڈ جناب اسد اللہ بیگ اور اسپیشل آفیسر جناب محمد جلال الدین اکبر سے نمائندگی کی ۔ جس کے نتیجہ میں آج وقف بورڈ کی ایک خصوصی ٹیم نے مجاہد پور تالاب کی مسجد کا دورہ کیا اور عثمان الہاجری کی امامت میں نماز ادا کی ۔ اس سے قبل مسجد کے اندرونی حصہ میں ڈالے گئے کُم کُم اور گیرو کو صاف کیا گیا ۔ مجاہد پور تالاب میں موجود تاریخی مسجد کے تحفظ کے لیے وقف بورڈ نے نہ صرف مقامی پولیس سے نمائندگی بلکہ کلکٹر رنگاریڈی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے تاریخی قطب شاہی مسجد کے تحفظ پر زور دیا ۔ وقف عہدیداروں کے وفد میں جناب افتخار مشرف ویجلنس آفیسر ، سابق سی ای او جناب عبدالغفار ، ریٹائرڈ ڈی ایس پی محمد عظمت اللہ خاں ، وقف انسپکٹر رنگاریڈی جناب حیوم خاں ، سروئیر محمد شجاعت اللہ ، محمد غوث اور محمد معراج کے علاوہ صدر مجاہد پور تالاب مسجد کمیٹی محمد عظمت کے علاوہ جناب عثمان الہاجری اور سیدکلیم الدین عسکر صدر گریٹر حیدرآباد تنظیم انصاف شامل تھے ۔ محمد عثمان الہاجری نے بتایا کہ مجاہد پور کے مسلمانوں میں خوف کا ماحول پایا جاتا ہے ۔ پولیس پکٹ کی تعیناتی کے باوجود مسجد میں کُم کُم اور گیرو کا چھڑکاؤ افسوسناک بات ہے ۔ انہوں نے سرکاری عہدیداروں اور چیف منسٹر مسٹر کے سی آر کے علاوہ ڈپٹی چیف منسٹر سے مطالبہ کیا کہ وہ اس معاملہ میں مداخلت کرتے ہوئے مجاہد پور گاؤں کے خوفزدہ مسلمانوں میں پائے جانے والا خوف دور کریں اور قطب شاہی مسجد کے تحفظ کو یقینی بنائیں ۔ دوسری جانب وفد نے یم آر او کلکاچیرلہ محترمہ سبھاشنی کو بھی درخواست پیش کرتے ہوئے قدیم مسجد کے تحفظ پر زور دیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT