Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / مجرمین کی سیاسی سرپرستی نہیں ، چیف منسٹر یوگی کا ادعا

مجرمین کی سیاسی سرپرستی نہیں ، چیف منسٹر یوگی کا ادعا

Uttar Pradesh Chief Minister Yogi Adityanath along with Minister Gopal Tondon at 56 ventilator's inaugural at KGMU in Lucknow on Wednesday. Express Photo by Vishal Srivastav. 05.04.2017.

بی جے پی حکومت میں جرائم بڑھ گئے، اپوزیشن کا دعویٰ اور ایوانِ اسمبلی سے واک آؤٹ
لکھنو ، 16 مئی (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش میں کسی کو بھی سیاسی سرپرستی میں جرم کرنے نہیں دیا جائے گا، چیف منسٹر یوگی ادتیہ ناتھ نے آج یہ بات کہی۔ انھوں نے اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران ایس پی رکن نتن اگروال کے سوال کے جواب میں کہا کہ ریاست میں ہر کوئی جانتا ہے کہ لا اینڈ آرڈر میں بہتری ہوئی ہے۔ کسی بھی کو ریاست میں سیاسی سرپرستی کی آڑ میں جرم کا ارتکاب کرنے نہیں دیا جائے گا اور جو جرم کریں انھیں مجرمین سمجھا جائے گا۔ اس میں کوئی امتیاز نہیں برتا جائے گا۔ بی ایس پی لیجسلیچر پارٹی لیڈر لال جی ورما کی جانب سے قتل، ریپ، ڈکیتی اور لوٹ مار کے واقعات کی گزشتہ دو ماہ میں تعداد کی بابت پوچھے جانے پر چیف منسٹر نے کہا، ’’ہمیں ایک سال کا موقع دیجئے۔ آپ شاید یہاں سیاسی وجوہات کی بناء قبول نہ کریں لیکن آپ اور آپ کی فیملی ضرور تبدیلی محسوس کریں گے۔‘‘ تاہم اس جواب سے غیرمطمئن بی ایس پی ارکان نے ایوان سے واک آؤٹ کردیا۔ تاہم ، ایس پی لیجسلیچر پارٹی لیڈر رام گوئند چودھری نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی برسراقتدار آنے کے بعد جرائم کی تعداد بڑھی ہے۔ انھوں نے بی جے پی حکومت کی تشکیل کے بعد خراب لا اینڈ آرڈر کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ جب کسی بچہ کو پیدائش کے بعد پولیو ہوجائے تو اس کا علاج کرنا مشکل ہوتا ہے۔ ان کے ریمارک پر وزیر پارلیمانی امور سریش کھنہ نے جواب میں کہا کہ سابقہ اقتدار میں پولیو کا معاملہ نہیں تھا بلکہ سارا بدن متاثرہ تھا اور موجودہ حکومت اس کا علاج کرے گی۔ چودھری نے یوگی کو اُن کی کوششوں کیلئے سراہا لیکن الزام عائد کیا کہ اُن کے وزراء انھیں بدنام کرنے کیلئے درست جوابات نہیں دے رہے ہیں اور پھر ایس پی اراکین کے ہمراہ واک آؤٹ کرگئے۔
لا اینڈ آرڈر پر التوا کی نوٹسیں مسترد
قبل ازیں اترپردیش اسمبلی کے اسپیکر ہردیا نارائن ڈکشٹ نے آج اپوزیشن کی وہ نوٹسیں مسترد کردیئے جو دن کی کارروائی کے التوا کیلئے پیش کی گئی تھیں۔ جیسے ہی ایوان دن کی کارروائی کیلئے مجتمع ہوا بعض اپوزیشن اراکین اپنی نشستوں سے کھڑے ہوگئے اور جاننا چاہا کہ لا اینڈ آرڈر کے بارے میں ایوان کی معمول کی کارروائی ملتوی کرنے سے متعلق ان کی نوٹسوں کا کیا ہوا۔ اسپیکر نے کہا کہ یہ نوٹسیں مناسب ڈھنگ سے پیش نہیں کی گئی اس لئے مسترد ہوگئی۔

TOPPOPULARRECENT