Monday , October 23 2017
Home / جرائم و حادثات / مجلسی کارپوریٹر کی گرفتاری کی کوشش پر کشیدگی،2012 کے فرقہ وارانہ نوعیت کے کیس پر پولیس کارروائی

مجلسی کارپوریٹر کی گرفتاری کی کوشش پر کشیدگی،2012 کے فرقہ وارانہ نوعیت کے کیس پر پولیس کارروائی

حیدرآباد ۔ 16 اگست (سیاست نیوز) حیدرآباد پولیس کی اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) نے آج شاہ علی بنڈہ کے مجلسی کارپوریٹر مصطفی علی مرتضیٰ کو سال 2012ء کے فرقہ وارانہ نوعیت کے کیس میں گرفتار کرنے کی کوشش کی جس کے بعد علاقہ میں معمولی سی کشیدگی پیدا ہوگئی۔ تاہم نامپلی کریمنل کورٹ کے تیسرے ایڈیشنل میٹرو پولیٹن سیشن جج نے مجلسی کارپوریٹر کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد کردی۔ مذکورہ کارپوریٹر کو گرفتار کرنے کیلئے ایس آئی ٹی ٹیم آج صبح 9 بجے ان کے مکان واقع حسینی علم اولڈ سٹی کے رکن اسمبلی چارمینار نے مبینہ طور پر پولیس کی کارروائی میں خلل پیدا کردیا اس کے بعد علاقہ میں معمولی سی کشیدگی پیدا ہوگئی۔ سال 2012ء میں بھاگیہ لکشمی مندر سے متعلق فرقہ وارانہ نوعیت کا ایک مقدمہ حسینی علم پولیس اسٹیشن میں درج کیا گیا تھا جس میں سابق کارپوریٹر محمد غوث، مکرم اور مصطفی علی مرتضیٰ کو مفرور بتایا گیا تھا۔ 25 جولائی کو ایس آئی ٹی نے محمد غوث کو گرفتار کرتے ہوئے انہیں جیل بھیج دیا تھا بعدازاں ضمانت پر ان کی رہائی عمل میں آئی جبکہ ایس آئی ٹی مسلسل مرتضیٰ اور مکرم کی تلاش میں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT