Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / مجلس اور بی جے پی میں خفیہ اتحاد سے متعلق کانگریس کا موقف حق بجانب

مجلس اور بی جے پی میں خفیہ اتحاد سے متعلق کانگریس کا موقف حق بجانب

بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی یاتین اوزا کی تصدیق کے بعد کوئی راز پوشیدہ نہیں : اُتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ 12 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہا کہ مجلس اور بی جے پی میں خفیہ اتحاد ہونے کی بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی نے تصدیق کرتے ہوئے کانگریس کے الزام کو حق بجانب قرار دیا ۔ آج گاندھی بھون میں میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہا کہ گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں کانگریس پارٹی نے مجلس اور بی جے پی کے درمیان خفیہ سازباز ہونے کا انکشاف کیا تھا ۔ گجرات کے سابق بی جے پی کے رکن اسمبلی یاتین اوزا نے اس کی تصدیق کی ہے ۔ مجلس اور بی جے پی اپنے سیاسی فائدے کے لیے ہندوؤں اور مسلمانوں کو مذہبی جذبات بھڑکاتے ہوئے تقسیم کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے کہا کہ تنظیمی سطح پر کانگریس کا کام ٹھیک چل رہا ہے ۔ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے نائب صدور اور جنرل سکریٹریز کو اضلاع کا انچارجس نامزد کرتے ہوئے اسمبلی تا اضلاع سطح تک کمیٹیاں تشکیل دینے کی ذمہ داریاں سونپی گئی ہے بیشتر انچارجس اپنی ذمہ داری بخوبی نبھا رہے ہیں ۔ جس سے وہ مطمئن ہیں ۔ چند انچارجس کی کارکردگی توقع کے مطابق نہیں ہے ان سے مذاکرات کی جائے گی ۔ کسانوں کے مسائل پر 30 جولائی کو شام میں عادل آباد میں احتجاجی جلسہ منعقد کیا جائے گا ۔ اس سے قبل صبح 10 بجے کانگریس رابطہ کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوگا ۔ جس میں آل انڈیا کانگریس کے جنرل سکریٹری و انچارج تلنگانہ کانگریس امور مسٹر ڈگ وجئے سنگھ شرکت کریں گے ۔ 24 جولائی کو پداپلی میں ایک احتجاجی جلسہ عام منعقد کیا جائے گا ۔ آبپاشی پراجکٹس سے متعلق چیف منسٹر کے پیش کردہ پاور پوائنٹ پریزنٹیشن کے جواب میں وہ کانگریس کی جانب سے پاور پوائنٹ پریزنٹیشن پیش کریں گے ۔ چیف منسٹر نے جو اعداد و شمار پیش کئے ہیں وہ گمراہ کن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ دولت مند ریاست ہونے کا دعویٰ کھوکھلا ثابت ہورہا ہے ۔ ریاست مالی بحران کا شکار ہے ۔ فلاحی اسکیمات ، فیس ری ایمبرسمنٹ ، آروگیہ شری اور دیگر اسکیمات کو چلانے کے لیے قرضوں پر انحصار کرنا پڑرہا ہے ۔ کانگریس پارٹی نئے اضلاع کی تشکیل کے خلاف نہیں ہے تاہم نئے اضلاع جغرافیائی انداز میں ہونی چاہئے ۔ سیاسی طرز پر تشکیل دی جانے والے اضلاع کی کانگریس مخالفت کرے گی ۔ اسمبلی پر چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کو احترام نہیں ہے ۔ کانگریس نے اپنے دور میں آخری سیشن 50 دن کا منعقد کیا تھا ۔ ٹی آر ایس حکومت دستوری تقاضوں کی تکمیل کے لیے سال میں صرف 20 اسمبلی کا سیشن برائے نام منعقد کررہی ہے ۔ کانگریس پارٹی آبپاشی پراجکٹس اور ترقی کے خلاف نہیں ہے تاہم حکومت اپنی جانب سے جاری کردہ جی او 123 فوری طور پر منسوخ کرتے ہوئے حصول اراضیات قانون کے تحت متاثرین کو معاوضہ کے ساتھ راحت کاری کے اقدامات کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT