Thursday , March 23 2017
Home / شہر کی خبریں / مجلس بلدیہ حیدرآباد اضافی بجٹ حاصل کرنے کوشاں

مجلس بلدیہ حیدرآباد اضافی بجٹ حاصل کرنے کوشاں

ڈبل بیڈ روم اسکیم اور ہریتا ہرم پر عمل کے لیے حکومت کو تجاویز روانہ
حیدرآباد۔9 مارچ (سیاست نیوز) ریاست کے بجٹ میں اپنے لئے اضافی حصہ حاصل کرنے اور سال گذشتہ کے مقابلہ میں 3گنا اضافہ کے متعلق مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے حکومت کو تجاویز روانہ کی ہیں ان تجاویز کے مطابق حکومت سے ڈبل بیڈ روم اسکیم کے علاوہ سلم سے پاک حیدرآباد اور ہریتا ہرم منصوبہ کے تحت اضافی تخصیص کی خواہش کی گئی ہے اور عہدیدار اس بات سے پرامید ہیں کہ ان کی جانب سے روانہ کردہ تجاویز کو منظوری حاصل ہوجائے گی کیونکہ وزارت بلدی نظم و نسق کا قلمدان مسٹرکے ٹی راما راؤ کے پاس ہے اور شہری ترقیات کے لئے حکومت کی جانب سے کئے گئے متعدد اعلانات اور وعدوں کو قابل عمل بنانے کیلئے اضافی بجٹ ناگزیر ہے۔ ذرائع کے مطابق مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے جو تجاویز روانہ کی گئی ہیں ان کے مطابق جی ایچ ایم سی نے ریاستی حکومت سے 2ہزار 18کروڑ کی رقم مختص کرنے کا مطالبہ کیا ہے جس کے ذریعہ بلدی حدود میں ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر میں تیزی لانے اور سلم سے پاک حیدرآباد کے منصوبہ کو عملی جامہ پہنانے کے علاوہ ہریتا ہرم کے تحت شجرکاری کا منصوبہ ہے۔تفصیلات کے مطابق ریاستی حکومت نے مالی سال 2016-17کے دوران مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے لئے 526کروڑ روپئے مختص کئے تھے جو حیدرآباد جیسی وسیع و عریض کارپوریشن کے لئے ناکافی ہیں اسی لئے جی ایچ ایم سی نے حکومت کو روانہ کردہ تجاویز میں 1153کروڑ 50لاکھ روپئے سڑکوں کی تعمیر و درستگی کے علاوہ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر کے لئے مختص کرنے کی خواہش کی ہے اور اس میں صراحت کی گئی ہے کہ کم از کم 1000 کروڑ روپئے صرف ڈبل بیڈ روم تعمیر امکنہ کیلئے مختص کئے جائیں تاکہ تعمیراتی سرگرمیوں میں تیزی لائی جا سکے کیونکہ یہ حکومت کا انتخابی وعدہ ہے۔ اسی طرح ہریتا ہرم کے تحت شجرکاری کیلئے 375کروڑ کی تخصیص کے علاوہ سلم سے پاک حیدرآباد کے لئے 250کروڑ کی تخصیص کا منصوبہ پیش کیا گیا ہے اور اس بات کی خواہش کی گئی ہے کہ سڑکوں اور ڈرین سسٹم کو بہتر بنانے کیلئے 500کروڑ روپئے کی تخصیص عمل میںلائی جائے۔جی ایچ ایم سی کی جانب سے پیش کی گئی ان تجاویز کو حکومت تلنگانہ کے بجٹ میں جگہ ملتی ہے تو ایسی صورت میں جی ایچ ایم سی کے بجٹ میں تین گنا اضافہ ریکارڈ کیا جا سکتا ہے جس کے ذریعہ شہر کے ترقیاتی کاموں میں تیزی ممکن ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT