Tuesday , September 26 2017
Home / سیاسیات / مجلس کی بدعنوان کانگریس اور فرقہ پرست شیوسینا کو مدد

مجلس کی بدعنوان کانگریس اور فرقہ پرست شیوسینا کو مدد

مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن میئر و ڈپٹی میئر انتخابات میں پارٹی ارکان غیرحاضر
مالیگاؤں ۔ 14جون (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس کے امیدوار شیخ رشید کو آج مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن کے میئر کی حیثیت سے منتخب کرلیا گیا۔ شیوسینا کے سکھاگھوڈکے ڈپٹی میئر منتخب کئے گئے۔ رشید نے جو سابق رکن اسمبلی ہیں، 41 ووٹ حاصل کرتے ہوئے اپنے حریف این سی پی کے نبی احمد کو شکست دی، جنہیں 34 ووٹ حاصل ہوئے تھے۔ کلکتہ بی رادھا کرشنن نے میئر اور ڈپٹی میئر کے انتخابات کے بعد ان نتائج کا اعلان کیا۔ 41 ووٹ حاصل کرنے والے گھوڈکے نے این سی پی ۔ جنتادل امیدوار منصور احمد کو شکست دی۔ منصور احمد کو 27 ووٹ ملے تھے۔ مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن کے گذشتہ ماہ منعقدہ انتخابات میں کانگریس کو 28، این سی پی۔ جنتادل اتحاد کو 27، شیوسینا کو 13، بی جے پی کو 9 اور مجلس کو 7 نشستیں حاصل ہوئی تھیں۔ آج رائے دہی کا ایک دلچسپ پہلو یہ بھی رہا کہ مجلس کے سات کارپوریٹرس غیرحاضر رہے اور انہوں نے کانگریس ۔ شیوسینا اتحاد کو کامیاب بنانے کی کوشش کی۔ اسدالدین اویسی نے انتخابی ریالیوں میں کانگریس پر کرپشن کا الزام عائد کرتے ہوئے عوام سے یہ اپیل کی تھی کہ وہ ان جماعتوں کو مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن کا اقتدار حوالے نہ کریں جنہوں نے بلدیہ کی جائیدادیں 137 روپئے ماہانہ کرایہ پر دی ہیں۔ انتخابی نتائج کے بعد مجلس نے فرقہ پرست جماعتوں سے فاصلہ برقرار رکھنے کا اعلان کیا لیکن آج پارٹی نے ان سب اصولوں کو فراموش کردیا اور کانگریس ۔ شیوسینا کے میئر و ڈپٹی میئر کو کامیاب بنانے کی حکمت عملی اپنائی۔ شیخ رشید نے میئر منتخب ہونے کے بعد پریس کانفرنس میں مجلس کے کارپوریٹر یونس عیسیٰ کا کم از کم تین مرتبہ تذکرہ کیا اور بتایا کہ انہیں تجربہ کار کارپوریٹرس جیسے یونس عیسیٰ کی تائید حاصل رہی اور وہ مالیگاؤں کی ترقی کیلئے مل کر کام کریں گے۔ اس سے پہلے انتخابی عمل جیسے ہی شروع ہوا مجلس کے کارپوریٹر یونس عیسیٰ جو شیخ رشید کے بازو بیٹھے تھے، میئرمنتخب ہونے پر مصافحہ کرتے ہوئے مبارکباد دی۔ انتخابی نتائج کے بعد کانگریس کے حامی ایوان میں داخل ہوئے اور مجلس کے قائد ایوان خالد یونس عیسیٰ کی گلپوشی کی۔ میئر اور ڈپٹی میئر انتخابات میں مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن میں کانگریس اور شیوسینا نے حیرت انگیز طور پر اتحاد کا فیصلہ کیا ہے۔ یہی نہیں بلکہ بھیونڈی میونسپل کارپوریشن میں بھی دونوں جماعتوں نے اتحاد کیا ہے۔ دوسری طرف این سی پی اور جنتادل (ایس) و بی جے پی نے اتحاد کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT