Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / محبوبہ مفتی کی چیف منسٹر جموں و کشمیر کی حیثیت سے حلف برداری

محبوبہ مفتی کی چیف منسٹر جموں و کشمیر کی حیثیت سے حلف برداری

ریاست کی پہلی خاتون وزارت اعلی ہونے کا اعزاز۔ 21 رکنی کابینہ نے بھی حلف لیا ۔ وزیر اعظم کا نیک تمناؤں کا اظہار
جموں ۔4اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) پی ڈی پی کی سربراہ محبوبہ مفتی کو آج جموں و کشمیر کی پہلی خاتون چیف منسٹر کی حیثیت سے حلف دلایا گیا ہے ۔ وہ بی جے پی کے ساتھ قائم کی گئی حکومت کی قیادت کرینگی ۔ وزارت میں انہوں نے اپنی پارٹی کے دو قائدین کو شامل نہیں کیا ہے ۔ محبوبہ مفتی اس عہدہ پر اپنے والد مفتی محمد سعید مرحوم کی جانشین بنی ہیں۔ وہ اپنے والد کے انتخاب کے بعد پارٹی صدر بن گئی تھیں۔ بی جے پی نے اپنے دو قائدین کیلئے کابینی رتبہ حاصل کرلیا ہے ۔ پارٹی نے نرمل سنگھ کو ڈپٹی چیف منسٹر برقرار رکھا ہے ۔ اس عہدہ پر نرمل سنگھ مفتی محمد سعید کی وزارت میں بھی شامل تھے ۔ مفتی سعید کا 7 جنوری کو انتقال ہوگیا تھا ۔ سیاہ لباس زیب تن کئے ہوئے 56 سالہ محبوبہ مفتی نے عہدہ اور رازداری کا اردو زبان میں حلف لیا ۔ محبوبہ مفتی ہنوز لوک سبھا کی رکن ہیں۔ محبوبہ مفتی نے 1999 میں یہ جماعت قائم کی تھی اور چیف منسٹر کی حیثیت سے ان کی حلف برداری اہمیت کی حامل ہوگئی ہے کیونکہ وہ مسلم اکثریتی ریاست جموں و کشمیر کی پہلی خاتون چیف منسٹر ہیں۔ وہ ریاست کی 13 ویں چیف منسٹر ہیں۔ محبوبہ مفتی ہندوستان میں کسی بھی ریاست کی چیف منسٹر بننے والی دوسری خاتون چیف منسٹر ہیں۔ اس سے قبل 1980 میں سیدہ انورہ تیمور کو آسام میں پہلی مسلم خاتون چیف مسنٹر ہونے کا اعزاز ملا تھا ۔ وہ اس عہدہ پر جون 1981 تک فائز رہی تھیں۔ گورنر جموں و کشمیر این این ووہرہ نے چیف منسٹر محبوبہ مفتی کے علاوہ 21 دوسرے وزرا کو بھی حلف دلایا ہے ۔ اس بار بی جے پی کو کابینہ میں 6 کی بجائے 8 نمائندگیاں دی گئی ہیں۔ اس کے تین ارکان کو منسٹر آف اسٹیٹ بھی بنایا گیا ہے ۔ پی ڈی پی کے گذشتہ مرتبہ کے 11 کی بجائے 9 کابینی وزیر ہونگے ۔ سابق چیف منسٹرس فاروق عبداللہ ‘ ان کے فرزند عمر عبداللہ ‘ مرکزی وزرا وینکیا نائیڈو ‘ جتیندر پرساد ( بی جے پی ) اور ہرسمراٹ کور ( اکالی دل ) نے بھی راج بھون میں منعقدہ تقریب حلف برداری میں شرکت کی ۔ مرکزی وزرا تاخیر سے تقریب میں پہونچے تھے ۔ حلف برداری تقریب سے کانگریس نے دوری اختیار کی اور اس نے مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ اترکھنڈ اور اروناچل پردیش میں پارٹی کی منتخبہ حکومتوں کو زوال کا شکار کرنے کی ذمہ دار ہے ۔ قبل امیں دن میں ریاست میں گذشتہ 86 دنوں سے نافذ گورنر راج کو ختم کردیا گیا تاکہ وہاں ایک منتخبہ حکومت کی حلف برداری ہوسکے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے نئی حکومت کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے اور اس امید کا اظہار کیا کہ یہ حکومت ریاست کے عوام کے خوابوں اور خواہشات کی تکمیل کریگی ۔ مودی نے اپنے ٹوئیٹر پر کہا کہ وہ محبوبہ مفتی ‘ ڈاکٹر نرمل سنگھ اور آج جن وزرا نے حلف لیا ہے انہیں مبارکباد دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہیں امید ہے کہ جموں و کشمیر کی نئی حکومت عوام کے خوابوں اور خواہشات کی تکمیل کیلئے ہر ممکن جدوجہد کریگی اور جموں و کشمیر کو ترقی کی نئی بلندیوں پر لے جائیگی ۔ پی ڈی پی کے اسمبلی میں 27 ارکان اسمبلی ہیں اور اس نے سید الطاف بخاری اور جاوید مصطفی کو کابینہ سے باہر کردیا ہے جبکہ منسٹر آف اسٹیٹ محمد اشرف میر کی بجائے فاروق عندرابی اور عبدالمجید پڈار کی بجائے ظہور میر کو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے ۔ اشرف میر نے انتخابات میں سابق چیف منسٹر عمر عبداللہ کو شکست دی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT