Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / محبوب نگر کی سڑکیں انتہائی خستہ اور ناکارہ

محبوب نگر کی سڑکیں انتہائی خستہ اور ناکارہ

محبوب نگر /5 نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) عوام کی سہولتوں کی مدنظر رکھتے ہوئے کسی سیاسی دباؤ میں آئے بعیر کوئی اعلی عہدیدار جرائتمندانہ اقدام اٹھاتا ہے تو اس کا فیصلہ ہمیشہ کیلئے تاریخ کے صفحات میں محفوظ ہوجاتا ہے ۔ محبوب نگر ٹاون کی تنگ سڑکیں ، روز بہ روز بڑھتی ٹریفک اور ہجوم محبوب نگر کے عوام کیلئے درد سر بنتا جارہا ہے ۔ عوام روزانہ مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں ۔ ٹاون میں سڑکوں کی توسیع کیلئے 6 سال قبل ہی بلدیہ نے ماسٹر پلان منظور کیا تھا ۔ لیکن انتہائی افسوس کی بات ہے کہ تاحال عمل آوری نہیں ہوسکی ۔ اس مسئلہ پر عوام تشویش میں مبتلا ہیں کہ آحر کیوں عمل آوری نہیں ہو رہی ہے ۔ بعضنامور تاجرین اور بعض سیاسی قائدین کی ملی بھگت کی وجہ سے اس کو التواء میں رکھے جانے کی اطلاعات ہیں جس سے عوام ناراض ہیں ۔ ایسا ہی مسئلہ کریم نگر میں درپیش تھا لیکن ضلع کلکٹر نے سخت اقدام اٹھاتے ہوئے سڑکوں کو توسیع کرواتے ہی اپنے اس فیصلے کو تاریخ میں محفوظ کرادیا ۔ حیدرآباد سے صرف 100 کیلومیٹر دور مستقر محبوب نگر کی بلدیہ کو اسپیشل گریڈ کا درجہ حاصل ہے لیکن ٹاون کی سڑکیں انتہائی ختسہ ناکارہ اور تباہ ہیں ۔ حالانکہ تلنگانہ ریاست میں ضلع محبوب نگر کو سب سے بڑے ضلع کا درجہ حاصل ہے جبکہ دیگر اضلاع نظام آباد ، کریم نگر میں کشادہ اور بہترین سڑکیں ہیں ۔ محبوب نگر ٹاون کی آبادی ڈھائی لاکھ سے زائد ہے اور آبادی کے لحاظ سے گاڑیوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ 2008 میں بلدیہ محبوب نگر نے خانگی ادارے کے ذریعہ سروے کرایا تھا اور آنے والے 20 برسوں کے پیش نطر ماسٹر پلان تیار کیا گیا تھا ۔ بلدیہ محبوب نگر کے 2009 میں اسے منظوری دی تھی ۔ شہری ترقیاتی محکمہ کے ذریعہ خصوصی گرانٹ منظور کراتے ہوئے ٹاون کی سڑکوں کی توسیع کے اقدامات کا فیصلہ کیا گیا تھا ۔ ٹاون کی سڑکوں کے اطراف صرف 10 فیصد کاروباری ادارے ہیں صرف ان کی سہولت کے خاطر اس عوامی اہم اور ضروری کام کو روکا جارہا ہے جس سے ٹریفک مسائل میں زبردست اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ ایس وی ایس ہاسپٹل تا مٹو گڈہ ، نیو ٹاون کلکٹریٹ ، اشوک ٹاکیز سرکل ، ون ٹاون ، بنڈی میڈی پلی کی سڑک پر مسلسل حادثات پیش آرہے ہیں ۔ اس سڑک پر اندازاً 30 ہزار بائیکس 5 ہزار آٹوز اور دیگر 1500 گاڑیاں دوڑتی ہیں محبوب نگر کی موجودہ 80 فٹ سڑک کو 100 فٹ توسیع کرنے کیلئے 1995 میں ہی فیصلہ لیا گیا تھا۔ تاحال عمل آوری نہ ہوسکی ۔ جبکہ مینگنڈہ تانڈہ میڈی پلی کو نیشنل ہائی وے 167 سے مربوط کیا گیا ہے ۔ ماسٹر پلان کے تحت 23 سڑکوں کی توسیع کیلئے 200 کروڑ روپئے درکار ہیں ۔ اسگرانٹ کو منظور کرانے کیلئے بلا لحاظ سیاسی وابستگی تمام قائدین کا حرکت میں آنا ضروری ہے ۔ اس ضمن میں مقامی ایم ایل اے وی سرینواس گوڑ نے سیاست نیوز کو بتایا کہ سڑکوں کی توسیع کیلئے ریاستی وزیر برائے عمارت و شوراع تملا ناگیشور راؤ کو مکتوب روانہ کردیا ہے ۔ جس میں 30 کروڑ کی خصوصی گرانٹ کی منظوری کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بہت جلد سرکوں کی توسیع کے کام کا آغاز ہوگا ۔ جس کیلئے عوام اور تاجرین کا تعاون بھی ضروری ہے ۔

TOPPOPULARRECENT