Sunday , August 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / محسن خان کا خود سے جونیر اکرم اور رمیز کو انٹرویو دینے سے انکار

محسن خان کا خود سے جونیر اکرم اور رمیز کو انٹرویو دینے سے انکار

کراچی ۔15 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق اوپنر محسن حسن خان نے کہا ہے کہ اگر پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) نے انہیں ہیڈ کوچ کے عہدے کیلئے انٹرویو دینے طلب کیا تو وسیم اکرم اور رمیز راجہ کے سامنے پیش نہیں ہوں گے۔ سابق ہیڈ کوچ وقار یونس کے مستعفی ہونے کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے کوچ کے تقرر کیلئے سابق کرکٹرز وسیم اکرم اور رمیز راجہ پر مشتمل ایک پینل تشکیل دیا تھا۔ ان دونوں نے اپنا کھیل  اس وقت شروع کیا تھا جس وقت محسن کرکٹ سے سبکدوش ہو رہے تھے لہذا محسن خان کے بموجب  وہ اپنے جونیئرز کو جوابدہ نہیں ہیں۔  محسن حسن خان نے کہا کہ اگر میں نے کبھی ہیڈ کوچ کے عہدے کیلئے درخواست دی تو براہ راست چیئرمین پی سی بی کو دوں گا۔ میں وسیم اکرم اور رمیز راجہ کو انٹرویو دینے پر حامی نہیں بھروں گا جو دونوں ہی پاکستان کرکٹ میں مجھ سے جونیئر ہیں۔ بعد میں اداکاری کا شعبہ اختیار کرنے والے سابق کرکٹر کو  ٹیم کی کوچنگ کیلئے مضبوط امیدوار تصور کیا جا رہا ہے اور اگر وہ یہ عہدہ حاصل کرنے میں کامیاب رہتے ہیں تو دوسری مرتبہ ٹیم کے ہیڈ کوچ بنیں گے۔ اس سے قبل انہوں نے 2011-12  میں پاکستانی ٹیم کی کوچنگ کی تھی جہاں  ٹیم نے سری لنکا، بنگلہ دیش اور اس وقت کی عالمی نمبر ایک انگلینڈ کو سیریز میں شکستوں سے دوچار کیا تھا لیکن اس کے بعد یہ عہدہ ڈیو واٹمور کو دے دیا گیا۔ محسن نے کہا کہ میں ماضی میں بھی کامیابی کے ساتھ اپنی ٹیم کی کوچنگ کر چکا ہوں، لہٰذا اصولاً مجھے ان کھلاڑیوں پر اپنی اہلیت ثابت کرنے کی ضرورت نہیں جنہوں نے میرے کیریئر کے اختتام پر اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔ سابق اوپنر نے کہا کہ  اْس وقت بورڈ نے مجھ سے غلط رویہ اختیار کیا اور کوئی مناسب وجہ بتائے بغیر ہی مجھے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔ میں نے ہیڈ کوچ کی حیثیت سے اچھی کارکردگی دکھائی اور میرے کھلاڑیوں سے اچھے تعلقات تھے۔ انہوں نے پی سی بی کو مشورہ دیا کہ وہ غیر ملکی امیدواروں پر غور کرنے کے بجائے مقامی کوچز پر اعتماد کرے۔

TOPPOPULARRECENT