Tuesday , September 19 2017
Home / دنیا / محمد نشید نظربندی کے بعد دوبارہ جیل میں

محمد نشید نظربندی کے بعد دوبارہ جیل میں

مالے ۔ 24 اگست (سیاست ڈاٹ کام) مالدیپ کے سابق صدر محمد نشید کو پولیس نے جبریہ طور پر دوبارہ جیل میں بند کردیا۔ حالانکہ ایک ماہ قبل ہی ان کی 13 سالہ سزائے قید کو نظربندی میں تبدیل کردیا گیا تھا۔ لہٰذا ان کی پارٹی کے قائدین سے پولیس کی اس زبردستی کو غیرقانونی قرار دیا۔ محمد نشید کی پارٹی مالدیوین ڈیموکریٹک پارٹی (MDP) کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا کہ پولیس عہدیدار بغیر کسی عدالتی وارنٹ کے ان کے مکان میں داخل ہوگئے جس کیلئے انہوں نے مکان کا باب الداخلہ بھی توڑ دیا۔ انہیں نظربند کئے جانے کے احکامات کے بعد پولیس کے ذریعہ اس طرح جبری طور پر دوبارہ جیل لے جانا غیرقانونی اور غیرآئینی ہے۔ دوسری طرف کریکشنل سرویس نے یہ استدلال پیش کیا کہ محمد نشید کو ان کے مکان میں صرف 8 ماہ کیلئے عارضی طور پر نظربند کیا گیا تھا جس کی وجہ ان کی خرابی صحت بتائی گئی ہے کیونکہ ڈاکٹرس نے یہ مشورہ دیا تھا کہ محمد نشید کو ایک ایسے ماحول میں رکھا جائے جہاں ان پر کوئی ذہنی دباؤ نہ ہو۔ اس طرح 8 ہفتوں کے لئے انہیں ان کے ہی مکان میں نظربند رکھا گیا جس کی میعاد جمعہ کو پوری ہوگئی۔ حالانکہ یہ بھی کہا جارہا ہے کہ حکومت نے محمد نشید کی مابقی سزائے جیل کو نظربندی میں تبدیل کردیا تھا۔ 48 سالہ محمد نشید مالدیپ کے پہلے جمہوری طور پر منتخبہ صدر تھے۔ انہیں 22 فروری کو گرفتار کیا گیا تھا جبکہ فروری 2011ء میں سیکوریٹی فورسیس کی بغاوت میں انہیں اقتدار سے بے دخل کردیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT