Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / محمد پہلوان کے وکیل پرکاش گوڑ کا اچانک دیہانت

محمد پہلوان کے وکیل پرکاش گوڑ کا اچانک دیہانت

اکبر الدین اویسی حملہ کیس کی سماعت 22مارچ تک ملتوی
حیدرآباد ۔  /9مارچ ۔ (سیاست نیوز) اکبر الدین اویسی حملہ کیس میں ماخوذ محمد بن عمر یافعی المعروف محمد پہلوان کے وکیل مسٹر پرکاش گوڑ کا کل رات دیر گئے اچانک قلب پر حملہ سے دیہانت ہوگیا ۔ ساتویں ایڈیشنل میٹرو پولیٹین سیشن جج نے اس کیس کی سماعت /22 مارچ تک ملتوی کردی ۔ ایڈوکیٹ پرکاش گوڑ ساکن سیتا رام باغ محمد پہلوان کے علاوہ حسن بن عمر یافعی ، فیصل بن احمد یافعی ، فضل بن احمد یافعی ، افیف بن یونس یافعی ، سیف بن حسین یافعی اور محمد عامر الدین عرف عامر کی پیروی کررہے تھے ۔ ان کے اچانک انتقال کی اطلاع آج ان کے ساتھی وکلاء ایڈوکیٹ راج وردھن ریڈی ، ایڈوکیٹ گرومورتی اور ایڈوکیٹ اچوتا ریڈی نے جج کو دی ۔ روزانہ کی اساس پر چلائے جارہے اس کیس کی سماعت روک دی گئی اور محمد پہلوان کو اپنے نئے وکیل کو منتخب کرنے کی ہدایت دی گئی ۔ ایڈوکیٹ پرکاش گوڑ نے اکبر الدین اویسی حملہ کیس میں اب تک 6 گواہ استغاثہ پر جرح کیا تھا اور کل ہی انہوں نے ایک اہم گواہ عبدالقادر صالح بلیشرم پر جرح کی تھی جو اپنے بیان سے منحرف ہوگیا تھا ۔ واضح رہے کہ استغاثہ نے اپنی چارج شیٹ میں یہ دعویٰ کیا تھا کہ عبدالقادر صالح بلیشرم نے پولیس کو دیئے گئے اپنے بیان میں یہ بتایا تھا کہ محمد پہلوان نے چندرائن گٹہ حملہ کیس کے دن اس کے ریلائینس موبائیل فون کا استعمال کیا تھا ۔ کل عدالت میں سرکاری وکیل کی جرح کے دوران پولیس کے دعویٰ کو غلط قرار دیتے ہوئے محمد پہلوان کے خلاف دیئے گئے بیان سے منحرف ہوگیا تھا ۔ ایڈوکیٹ پرکاش گوڑ گزشتہ 40 سال سے وکالت کررہے تھے اور ان کے آج اچانک دیہانت کے بعد نامپلی کریمنل کورٹ میں غم کی لہر دوڑ گئی ۔ مرحوم ایڈوکیٹ کے پسماندگان کو پرسہ دینے کیلئے کئی سینئر وکلاء اور سیاستداں ان کے مکان پہونچے اور آج دوپہر آصف نگر شمشان گھاٹ میں ان کی آخری رسومات انجام دی گئی ۔

TOPPOPULARRECENT