Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / محکمہ آبرسانی کے ٹنڈرس میں 54 کروڑ کا اسکام

محکمہ آبرسانی کے ٹنڈرس میں 54 کروڑ کا اسکام

اعلیٰ سطحی تحقیقات پر زور ، تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کا بیان
حیدرآباد ۔ 24 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے حیدرآباد میٹرو پولیٹن واٹر سپلائی اینڈ سیوریج بورڈ میں حالیہ طلب کردہ ٹنڈرس میں 54 کروڑ روپئے کا اسکام ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے اس کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا ۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترجمان تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر شرون کمار نے کہا کہ ڈائرکٹر حیدرآباد میٹرو پولیٹن اینڈ سیوریج بورڈ مسٹر جگدیشور نے شاہ پور نگر ، گچی باولی ، یلااماں بنڈا ، بورا بنڈہ ، ایس آر نگر ، لالہ گوڑہ ، حسین ساگر ، ٹٹی خانہ کے علاقوں میں واٹر اور سیوریج لائن بچھانے کے لیے ٹنڈرس طلب کیا ہے ۔ جس میں بڑے پیمانے کی بے قاعدگیوں کے ساتھ 53.98 کروڑ روپئے کا اسکام ہوا ہے ۔ جس کی اعلیٰ سطحی تحقیقات لازمی ہوگئی ہیں ۔ ترجمان اعلیٰ کانگریس پارٹی نے کہا کہ منیجنگ ڈائرکٹر واٹر ورکس کو صرف 50 لاکھ روپئے تک کے ٹنڈرس طلب کرنے کا اختیار ہے ۔ انہوں نے ضابطہ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ٹنڈرس طلب کئے ہیں ۔ ان بدعنوانیوں میں بورڈ کے ڈائرکٹر ( آپریشن ) رام موہن راؤ بھی برابر کے ذمہ دار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ان بے قاعدگیوں کو چیف منسٹر آفس نے بھی نوٹس کیا ہے اور ساتھ ہی بورڈ کو ہدایت دی گئی ہے کہ جو بھی بے قاعدگیاں ہوئی ہیں اس کی تحقیقات کریں ۔ مسٹر شرون کمار نے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ بورڈ کے صدر نشین ہیں اور ریاستی بلدی نظم و نسق کے نائب صدر نشین ہیں اس کے باوجود بورڈ میں بدعنوانیاں ہورہی ہیں ۔ چیف منسٹر نے بدعنوانیوں کا خاتمہ کرنے کا اعلان کیا مگر وہ جس بورڈ کے صدر نشین ہیں اس بورڈ میں 54 کروڑ روپئے کی بدعنوانیاں ہورہی ہیں ۔ انہوں نے ضلع کریم نگر میں پرامن احتجاج کرنے والے کانگریس کے سابق رکن پارلیمنٹ اور دوسرے کانگریس قائدین کو گرفتار کرنے کی سخت مذمت کی ۔۔

TOPPOPULARRECENT