Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی غیر اطمینان بخش

محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی غیر اطمینان بخش

اسمبلی کی پبلک اکاونٹس کمیٹی کا اجلاس ، گیتا ریڈی کی صدارت ، فاروق حسین کا خطاب
حیدرآباد۔ 9۔ مئی  ( سیاست نیوز) ریاستی اسمبلی کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا پہلا اجلاس آج منعقد ہوا، جس کی صدارت کمیٹی کی صدرنشین ڈاکٹر جے گیتا ریڈی نے کی۔ اجلاس میں کمیٹی کے ارکان فاروق حسین ، ڈاکٹر لکشمن ، بھانو پرساد ، راملو نائک ، بی بالراجو ، کشن ریڈی اور پی سدھاکر ریڈی نے شرکت کی ۔ چیف سکریٹری ڈاکٹر راجیو شرما کے علاوہ مختلف محکمہ جات کے پرنسپل سکریٹریز اور دیگر اعلیٰ عہدیدار شریک تھے۔ اجلاس میں مختلف محکمہ جات کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔ ٹی آر ایس کے رکن محمد فاروق حسین نے اقلیتی بہبود کے بجٹ کے خرچ میں سست رفتاری کا مسئلہ اٹھایا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی اطمینان بخش نہیں ہے ۔ اعلیٰ عہدیدار بجٹ کے خرچ اور فلاحی اسکیمات پر موثر عمل آوری کی کوشش کر رہے ہیں لیکن نچلی سطح پر عہدیداروں کی لاپرواہی سے بجٹ خرچ نہیں ہورہا ہے۔ فاروق حسین نے کہا کہ چیف منسٹر نے اقلیتی بہبود کیلئے 1130 کروڑ روپئے گزشتہ سال مختص کئے تھے جس میں سے صرف 40 فیصد بجٹ خرچ کیا گیا ۔ عہدیداروں کی عدم دلچسپی کے نتیجہ میں یہ صورتحال پیدا ہوئی ہے۔ فاروق حسین نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ اقلیتی اداروں میں عہدیداروں کی کمی کے بارے میں کمیٹی کو واقف کرائیں تاکہ حکومت سے نمائندگی کی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ بعض فلاحی اسکیمات میں بے قاعدگیاں اور اسکام منظر عام پر آئے ہیں۔  شادی مبارک اسکیم کا حوالہ دیتے ہوئے فاروق حسین نے کہا کہ اسکیم میں دھاندلیوں کے ذمہ دار افراد کے خلاف کارروائی ، معطلی اور رقومات کی وصولی کے بارے میں عوام کو واقف کرایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ فلاحی اسکیمات میں بے قاعدگیوں کو روکنے کیلئے سخت گیر اقدامات کئے جانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے غریبوں کیلئے ڈبل بیڈروم مکانات کی تعمیر اور بینکوں سے قرض کی فراہمی کا فیصلہ کیا ہے۔ عہدیداروں کو ذمہ داری ہے کہ ہر ضلع میں مقرر کردہ کوٹہ پر عمل کرتے ہوئے غریبوں کو فائدہ پہنچائیں۔ فاروق حسین نے عہدیداروں پر زور دیا کہ وہ مکمل سنجیدگی کے ساتھ کام کریں تاکہ سنہرے تلنگانہ کی تشکیل کا کے سی آر کا خواب پورا ہوسکے۔ انہوں نے عہدیداروں میں جوابدہی کا احساس پیدا کئے جانے کی ضرورت ظاہر کی۔ فاروق حسین نے اردو زبان میں تقریر کی اور کمیٹی کی صدرنشین اور ارکان نے ان کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT