Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / محکمہ موسمیات، بارش اور ہواؤں کی پیمائش سے قاصر

محکمہ موسمیات، بارش اور ہواؤں کی پیمائش سے قاصر

محکمہ میں عصری آلات کا فقدان، آفات سماوی سے بچنے کے اقدامات بھی ندارد
حیدرآباد 22 مئی (سیاست نیوز) محکمہ موسمیات گزشتہ دو ہفتوں سے جاری حیدرآباد میں تیز رفتار ہواؤں کی رفتار کی پیمائش سے قاصر ہے۔ شہر میں جاری تیز رفتار ہواؤں کی پیمائش کے لئے محکمہ موسمیات کے پاس عصری آلات موجود نہیں ہیں۔ جو آلات ہیں وہ غیر کارکرد ہونے کے سبب حیدرآباد کے محکمہ کو پونے کی رپورٹ پر انحصار کرنا پڑرہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ جمعہ تیز رفتار ہواؤں کے سبب ہوئے نقصانات کا اندازہ لگانے کے لئے جب ہواؤں کی رفتار کی رپورٹ طلب کی گئی تو اِس بات کا انکشاف ہوا کہ شہر حیدرآباد میں ہواؤں کی رفتار کی پیمائش کا آلہ غیر کارکرد ہے جس کی وجہ سے پیمائش ریکارڈ کیا جانا ممکن نہیں ہے۔ عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ہواؤں کی پیمائش کا ریکارڈ آئی ایم ڈی حیدرآباد کے پاس موجود ہوتا ہے اِسی لئے یہ کوئی حیرت انگیز یا پریشان کن بات نہیں ہے۔ جبکہ انڈین میٹرولوجیکل ڈپارٹمنٹ تلنگانہ (آئی ایم ڈی) کے بموجب جب تک تیز رفتار ہواؤں کی پیمائش کا ریکارڈ حاصل نہیں ہوتا اُس وقت تک یہ کہنا دشوار ہوتا ہے کہ ہواؤں کی رفتار کیا تھی لیکن محکمہ موسمیات کے عہدیدار یہ بھی کہہ رہے ہیں کہ ایرپورٹ وغیرہ پر موجود راڈار کے ذریعہ ہواؤں کی رفتار کی پیمائش ریکارڈ کی جاسکتی ہے جبکہ بعض عہدیداروں کا یہ خیال ہے کہ شہر کے نواحی اور مضافاتی علاقوں میں ہواؤں کی رفتار اتنی تیز نہیں تھی جتنی شہر میں تھی۔ اِسی لئے جب تک شہر حیدرآباد کے راڈار سے تفصیلات حاصل نہیں کی جاتی ، اُس وقت تک رفتار کی پیمائش کو درست قرار دیا جانا ممکن نہیں ہے۔ ذرائع کے بموجب جمعہ کی سہ پہر شروع ہوئی اچانک تیز ہواؤں کی رفتار 100 کیلو میٹر فی گھنٹہ ریکارڈ کی گئی۔ بتایا جاتا ہے کہ بادلوں کے ٹکرانے کے سبب موسم میں اِس قدر شدت ریکارڈ کی جاتی ہے اور ایسا موسم مانسون کی آمد تک برقرار رہنے کے خدشات پائے جاتے ہیں۔ بادلوں کے ٹکرانے کے سبب پیدا ہونے والی گڑگڑاہٹ اور گھن گرج کے ساتھ تیز رفتار ہوائیں انتہائی نقصان دہ ثابت ہوتی ہیں لیکن اِن آفات سماوی سے بچنے کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے جاسکتے اور نہ ہی اِس طرح کے موسم کی کوئی پیش قیاسی کی جاسکتی۔ ڈاکٹر سباراؤ میٹرولوجسٹ کے بموجب بادلوں کے زمین سے قریب ہونے اور آپس میں ٹکرانے سے اِس طرح کی صورتحال پیدا ہوتی ہے جوکہ شدید نقصان دہ ثابت ہوتی ہیں اور مانسون کی آمد تک اِس طرح کے موسم کے خدشات برقرار رہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT