Monday , September 25 2017
Home / ہندوستان / مدرسہ سرویس کمیشن ایکٹ کی تنسیخ برقرار، حکومت کی درخواست مسترد

مدرسہ سرویس کمیشن ایکٹ کی تنسیخ برقرار، حکومت کی درخواست مسترد

کولکتہ ۔ 9 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) کولکتہ ہائیکورٹ نے آج سنگل بنچ کے حکم کو برقرار رکھا ہے جس نے ویسٹ بنگال مدرسہ سرویس کمیشن ایکٹ 2008 کو کالعدم کردیا تھا ، چیف جسٹس منجولہ چیلورو اور جسٹس جوالہ ملیو باگچی پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے حکومت مغربی بنگال کی اپیل کو مسترد کردیا اور مذکورہ ایکٹ کو غیر دستوری قرار دیا جبکہ ایک تعلیمی ادارہ رحمانیہ ہائی اسکول نے سال 2003 ء میں ہائیکورٹ میں اس ایکٹ کو چیلنج کیا تھا اور سال 2014 ء میں جسٹس سمبودھا چکرورتی نے اپنے فیصلہ میں اس ایکٹ کو غیر دستوری قرار دیا تھا ۔ اس حکم کو چیلنج کرتے ہوئے ریاستی حکومت نے ڈیویژن بنچ کے روبرو اپیل دائر کی تھی۔عدالت نے کہا کہ قانون از خود غیر دستوری ہے کیونکہ دستور میں اس کی کوئی گنجائش نہیں ہے چنانچہ تنسیخ برقرار رہے گی۔

TOPPOPULARRECENT