Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / مدرسہ کے اساتذہ کو شمس آباد ایرپورٹ کی سیر مہنگی پڑی

مدرسہ کے اساتذہ کو شمس آباد ایرپورٹ کی سیر مہنگی پڑی

داڑھی اور ٹوپی دیکھ کر سیکوریٹی جوانوں نے دہشت گرد سمجھ لیا؟
شمس آباد ۔ 23 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز) : راجیو گاندھی انٹرنیشنل ایرپورٹ شمس آباد سی آئی ایس ایف عہدیداروں نے دو مدرسہ کے خدمت گذاروں کو شک کی بنا گرفتار کر کے شمس آباد آر جی آئی پولیس کے حوالہ کردیا ۔ اطلاع ملتے ہی تحقیقاتی ایجنسیاں پوچھ تاچھ کے لیے پہنچ گئیں ۔ تفصیلات کے بموجب محمد ادریس اور محمد جمیل متوطن جھارکھنڈ جو گزشتہ ایک سال سے ٹولی چوکی کے مدرسہ اسلامیہ یتیم خانہ میں خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ آج صبح یہ دونوں ایرپورٹ میں گھومنے آئے تھے کہ سی آئی ایس ایف عہدیداروں نے دونوں کو شک کی بناء گرفتار کر کے شمس آباد آر جی آئی اے پولیس کے حوالہ کردیا ۔ دونوں خدمت گذاروں سے پوچھ تاچھ کے لیے مختلف تحقیقاتی ایجنسیاں پہنچ کر پوچھ تاچھ کرنے پر ان کے یہاں سے کچھ نہیں ملا ۔ وہ دونوں کو کلین چٹ دیدی گئی ۔ انسپکٹر مہیش نے بتایا کہ دونوں کو تمام ضروری کاغذی کارروائی کے بعد رہا کردیا جائے گا ۔ محمد جمیل کے چچا محمد شرف نے بتایا کہ دونوں کو رات میں بوئن پلی میں جج کے روبرو پیش کیا جارہا ہے اور وہاں جانے کے بعد ہی ان کی رہائی عمل میں آئے گی ۔ اس سے قبل بھی کئی مرتبہ مشتبہ حالت میں گھومنے والے افراد کو پکڑ کر بعد تحقیقات رہا کردیا گیا اور جتنے بھی بار مسلمانوں کو پکڑا گیا ہمیشہ ہی تحقیقاتی ایجنسیاں پوچھ تاچھ کے لیے پہنچ جاتی ہیں اور غیر مسلمان افراد کو ایک دو گھنٹے میں کلین چٹ دے کر رہا کردیا جاتا ہے ۔ سائبر آباد پولیس کی جانب سے مسلمانوں کے ساتھ سوتیلے سلوک کب تک کیا جائے گا ۔ سر پر ٹوپی اور داڑھی رکھنے پر ان کی جانب سے دہشت گرد سمجھنا کب بند کیا جائے گا ۔ ایرپورٹ میں سی آئی ایس ایف عہدیدار بھی اپنے رویہ میں تبدیلی لانے کی ضرورت ہے ۔ مسلمانوں کو دہشت گرد سمجھنا کب بند ہوگا ۔ غیر مسلمانوں کو دو گھنٹے کے اندر ہی کلین چٹ اور مسلمانوں کو کئی گھنٹوں کی پوچھ تاچھ کے بعد بھی جج کے روبرو پیش کر کے ان کی رہائی عمل میں لائی جارہی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT