Sunday , June 25 2017
Home / اضلاع کی خبریں / مدور میں آلودہ پانی کے استعمال سے سینکڑوں افراد متاثر ضروری ادویہ کی شدید قلت

مدور میں آلودہ پانی کے استعمال سے سینکڑوں افراد متاثر ضروری ادویہ کی شدید قلت

‘حسن ‘آباد۔ 9 مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مدور منڈل کے مواضعات ریبرتی، ونگاپلی اوپرونی گڈا میں گزشتہ چند دنوں نلوں کے ذریعہ سربراہ کئے جانے والے پانی کے استعمال سے سینکڑوں افراد متاثر ہورہے ہیں۔ مقامی ذرائع کے بموجب مذکورہ مواضعات میں گزشتہ ایک ہفتے سے مشن بھاگیرتا کے تحت گوداوری کا پانی سربراہ کیا جارہا ہے، تاہم پانی کے مختلف نقائص و بہتر ڈھنگ سے فلٹر نہ ہونے کے باعث مقامی عوام خارش، کھجلی اور دیگر جلدی امراض کا شکار ہوکر چیریال، سدی پیٹ، جنگاؤں کے مختلف دواخانوں سے رجوع ہورہے ہیں۔ مقامی سطح پر قریبی سرکاری دواخانوں سے مختلف جلدی امراض کے انسداد کے لئے درکار ضروری ادویہ دستیاب نہ ہونے سے متاثرین کو شدید مشکلات و تکالیف برداشت کرنا پڑ رہا ہے۔ اس ضمن میں آج نمائندہ سیاست نے مشن بھاگیرتا کے ڈپٹی انجینئر انیل سے دریافت کیا تو بتایا گیا کہ مذکورہ مواضعات میں موجود واٹر ٹینکس کو بھاگیرتا کے پائپ لائنوں سے مربوط کرتے ہوئے گوداوری کا پانی تجربے کے طور پر سربراہ کیا گیا تھا، تاہم عوامی شکایتوں کے منظر عام پر آتے ہوئے سربراہی کو روک کر پانی کے نمونے حاصل کئے گئے جن کی جانچ ہونا باقی ہے۔ شدید مخالفت کرتے ہوئے موضلع گوٹاٹی پلی تا دفتر کلکٹریٹ سدی پیٹ تقریباً 53 کلومیٹر طویل پدیاترا منظم کی ہے جس کا افتتاح میں پی آئی کے ریاستی سیکریٹری کامریڈ چاڈا وینکٹ ریڈی انجام دیں گے۔ کامریڈ مندا پون کمار سی پی آئی ضلع سیکریٹری سدی پیٹ کے بموجب 20 رکنی پارٹی کارکن 10 تا 13 مارچ پدیاترا میں حصہ لیں گے۔ 13 مارچ کو دفتر کلکٹریٹ پر بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرہ ہوگا۔ انہوں نے ادعا کیا کہ آبی پراجیکٹ کی اونچائی میں مزید اضافے سے مزید کسان اپنی قیمتی اراضیات سے محروم ہوں گے، نیز خاطر خواہ معاوضہ نہ ملنے کے باعث شدید مالی نقصانات سے دوچار ہوں گے جس کی کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا شدت کے ساتھ مخالفت کرے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT