Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / مدھیہ پردیش میں جین برادری کا خاموش جلوس

مدھیہ پردیش میں جین برادری کا خاموش جلوس

’’مرن برت‘‘ پر راجستھان ہائیکورٹ کے فیصلہ پر احتجاج
بیتول (مدھیہ پردیش) ۔ 24 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام) مقامی جین برادری نے آج یہاں راجستھان ہائیکورٹ کے اس فیصلہ کے خلاف خاموش جلوس نکالا کہ جین مت کی ایک رسم و رواج سانترا (فاقہ کشی کے ذریعہ موت) غیر قانونی ہے۔ مکل جین سماج کے زیر اہتمام منعقدہ خاموش جلوس میں عدالتی فیصلہ پر نظرثانی کی گزارش کی گئی ۔ یہ جلوس علاقہ کوٹھی بازار سے نکل کر شہر کے مختلف راستوں سے گزرتے ہوئیامجھیرا پرشاونت مندر علاقہ بیتول گنج پہنچا۔ بعد ازاں جین برادری کے نمائندوں نے ضلع کلکٹر کو ایک میمورنڈم پیش کرتے ہوئے ’’سانترا سے متعلق عدالت کے فیصلہ پر نظرثانی کا مطالبہ کیا ۔ بعض ٹریڈ شعبوں نے مذکورہ مطالبہ کی تائید1.00 بجے تک اپنا کاروبار بند رکھا جبکہ جین برادری سے وابستہ سکراری اور خانگی ملازمین اور طلباء نے آج احتجاجی رخصت حاصل کرلی۔راجستھان ہائیکورٹ نے جاریہ ماہ کے اوائل میں جین مت کے رسم و رواج ’’سانترا‘‘ کو غیر قانونی قرار دیا تھا اور تعزیرات ہند 306 اور 309 کے تحت رضاکارانہ فاقہ کشی کی مدت کو قابل سزا بنایا تھا ۔ ہائیکورٹ نے کہا تھا کہ سانترا یا مرن برت جینے مت کا لازمہ نہیں ہے اور یہ بنیادی حقوق انسانی کے خلاف ہے۔

TOPPOPULARRECENT