Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مدینہ منورہ ایرپورٹ پر حیدرآبادی حاجی کو روک دیا گیا

مدینہ منورہ ایرپورٹ پر حیدرآبادی حاجی کو روک دیا گیا

فنگر پرنٹ میں فرق آنے پر ایمیگریشن حکام نے تحویل میں لیا
حیدرآباد۔/11اکٹوبر، ( سیاست نیوز) مدینہ منورہ کے ایر پورٹ پر ایمیگریشن حکام نے ایک حیدرآبادی حاجی کو فنگر پرنٹ میں فرق آنے پر سفر سے روک دیا اور انہیں اپنی تحویل میں رکھا ہے۔ 62سالہ بشیر الدین ساکن بھولکپور مشیرآباد جو پوسٹل ڈپارٹمنٹ کے ریٹائرڈ ملازم ہیں وہ اپنی اہلیہ، فرزند اور بہو کے ساتھ فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے روانہ ہوئے تھے۔ ان کی واپسی مدینہ منورہ سے کل رات 11:30بجے حیدرآباد پہنچنے والی فلائیٹ سے تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ ایر پورٹ پر پہنچنے کے بعد بشیر الدین نے خود اپنے طور پر ایمیگریشن حکام سے خواہش کی کہ ان کا فنگر پرنٹ حاصل کیا جائے۔ رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ ناسازی مزاج کے سبب انہوں نے اس طرح کی حرکت کی جبکہ کسی بھی حاجی کا فنگر پرنٹ حاصل نہیں کیا جارہا تھا۔ جیسے ہی فنگر پرنٹ حاصل کیا گیا ان کے سابقہ فنگر پرنٹ سے مختلف پایا گیا۔ سعودی عرب پہنچنے پر حاصل کردہ فنگر پرنٹ اور موجودہ فنگر پرنٹ میں تبدیلی کے ساتھ ہی حکام نے انہیں روک لیا اور وہ سفر سے محروم رہے۔ ان کے فرزند فہیم الدین کو بھی والد کی مدد کیلئے رکنا پڑا جبکہ خواتین حیدرآباد واپس ہوگئیں۔ حج ٹرمنل میں انہوں نے اسپیشل آفیسر حج کمیٹی پروفیسر ایس اے شکور کو اس واقعہ کی اطلاع دی جس پر فوری حج مشن اور ہندوستانی قونصل خانہ سے ربط قائم کیا گیا۔ تلنگانہ حج کمیٹی کی اطلاع پر حج مشن کے عہدیدار فوری حرکت میں آگئے اور انہوں نے ایر پورٹ پہنچ کر حکام سے بات چیت کی۔ عہدیداروں نے بتایا کہ بشیر الدین کا پھر ایک مرتبہ فنگر پرنٹ حاصل کیا جائے گا اور یکسانیت پائے جانے پر انہیں سفر کی اجازت دی جائے گی۔ ان کے فرزند نے بھی پروفیسر ایس اے شکور سے ربط قائم کیا اور حج کمیٹی کے تعاون پر اظہار تشکر کیا۔ حج مشن اور کونسلیٹ کے عہدیدار مسلسل سعودی حکام سے ربط میں ہیں اور فہیم الدین کو حج مشن میں قیام کی سہولت فراہم کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT