Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / مذہب کو سیاست کا آلۂ کار نہ بنایا جائے : کرزئی

مذہب کو سیاست کا آلۂ کار نہ بنایا جائے : کرزئی

کانپور ۔ 4 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مذہب کو سیاست کا آلۂ کار نہیں بنایا جانا چاہئے کیونکہ اس کی وجہ سے کئی نقصان ہوتے ہیں۔ سابق صدر افغانستان حامد کرزئی نے پاکستان سے خواہش کی کہ وہ اپنی تاریخ میں ایک نئے باب کا اضافہ کرے تاکہ اس علاقہ میں امن قائم ہوسکے اور علاقائی ممالک ترقی کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کے عوام کو مذہب کے نام پر بہت گمراہ کیا جاچکا ہے۔ مزید ایسی کوشش ناقابل برداشت ہوگی۔ حامد کرزئی نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کے نظریات مماثل ہیں اور دونوں کو تقریباً ایک ہی قسم کے خطرہ یعنی انتہاء پسندی کا سامنا ہے۔ خواتین کی افغانستان میں بااختیاری کے بارے میں انہوں نے کہا کہ جب افغانستان کا دستور مدون کیا گیا تھا تو دو خاتون ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ اب پارلیمنٹ کی جملہ تعداد کا 27 فیصد خواتین پر مشتمل ہے۔ خواتین اسکولس میں ٹیچرس ہیں۔ بینکوں کی اور تجارتی اداروں کی منیجر ہیں اور افغان عوام کا شعور دن بہ دن زیادہ بالغ ہوتا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ہندوستان میں خواتین کی بااختیاری کی تحریک سے بہت زیادہ متاثر ہیں۔
خطرہ سے دوچار غیرمقیم ہندوستانی واپس ہوجائیں : سشما سوراج
نئی دہلی ، 4 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) لڑائی سے بدحال یمن کے شہر عدن میں چار ہندوستانی خواتین کی موت کے تناظر میں وزیر امور خارجہ سشما سوراج نے ’’پُرخطر خطوں‘‘ میں مقیم تمام ہندوستانیوں سے وطن واپس ہوجانے کی اپیل کی ہے۔ انھوں نے آج رات ٹویٹ کیا کہ وہ اس طرح کے ’ڈینجر زونس‘ میں مقیم تمام ہندوستانیوں سے وطن واپسی کی اپیل کرتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT