Sunday , July 23 2017
Home / مذہبی صفحہ / مرسل : ابوزہیر نظامی فقیہ اور عابد

مرسل : ابوزہیر نظامی فقیہ اور عابد

حضرت حافظ محمدانواراﷲفاروقی رحمۃ اﷲ بانی جامعہ نظامیہ حقیقۃالفقہ، حصہ اول میں تحریر فرماتے ہیںکہ:
حضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فقیہ کی تعریف کی کہ شیطان کے مقابلہ میں وہ ہزار عابد سے بہتر ہے ، اس لئے کہ شیطان کا مقصود اصلی یہی ہے کہ خلاف شرع لوگوں سے کام کرائے اور بیچارہ عابد کو عبادت میں اتنی فرصت کہاں کہ معانی نصوص اور مواقع اجتہاد میں غور وفکر کر کے آپ ایسا حکم دے کہ خدا ورسول کی مرضی کے مطابق ہو جیسے محدثین کو ضبط اسانید اور تحقیق رجال وغیرہ فنون حدیث کے اشتغال میں اس کی نوبت ہی نہیں آتی ۔ یہ تو خاص فقیہ کا کام ہے کہ ہر مسئلہ میں تمام آیات و احادیث متعلقہ کو پیش نظر رکھ کر اپنی طبیعت وقاد سے کام لیتا ہے اور ان میں موشگافیاں کر کے کوشش کرتا ہے کہ شارع کی مرضی معلوم کرے ۔
کسی نے کیا خوب کہا ہے ’’ہر مردے و ہر کارے ‘‘ جامع ترمذی میں یہ روایت ہے ’’ عن ابی ہریرۃ رضی اﷲ عنہ قال قال رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم خصلتان لا یجتمعان فی منافق حسن سمت ولا فقہ فی الدین‘‘ یعنی فرمایا نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ دو خصلتیں منافق میں نہیں جمع ہوتیں ، اہل خیر کا طریقہ اختیار کرنا اور فقہ فی الدین یعنی دین کے معاملات و مسائل میں سمجھ۔
اور جامع الصغیر میں یہ روایت ہے ’’ قال النبی صلی اﷲ علیہ وسلم افضل العبادۃ الفقہ۔ طب عن ابن عمررضی اﷲ عنہما‘‘ یعنی تمام عبادتوں میں افضل فقہ ہے اس سے محدثین اور فقہا ء کا فرق اور ہر ایک وظیفے بھی معلوم ہوگئے کہ محدثین کا کام صرف احادیث کی حفاظت ہے ‘ صحیح حدیثیں تلف نہ ہوں اور کسی دوسرے کا کلام حدیث نہ بن جائے اور فقہاء کا کام ان احادیث محفوظہ میں خوض و فکر کرنا ہے ۔
(حقیقۃالفقہ، حصہ اول)

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT