Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکزی حکومت فرقہ پرست طاقتوں کے آگے بے بس

مرکزی حکومت فرقہ پرست طاقتوں کے آگے بے بس

اے پی سی آر کا مجسمہ امبیڈکر کے روبرو احتجاج ، مختلف شخصیتوں کا خطاب
حیدرآباد۔28اکٹوبر(سیاست نیوز)جنرل سکریٹری اسوسیشن فار پروٹکشن آف سیول رائٹس جناب عبدالجبار صدیقی نے فرقہ وارانہ واقعات کے ذریعہ اپنی ناکامیوںکو چھپانے کا مرکزی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ چھ ماہ کے مختصر وقفہ میں پچیس فیصد فرقہ وارانہ واقعات میںاضافہ اور 65فیصد اموات فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات میں رونماء ہوئے جس کی تمام تر ذمہ داری مرکزی حکومت پر عائد ہوتی ہے جو فرقہ پرست طاقتوں کے ناپاک عزائم کے سامنے بے بس اور مجبور ہے۔ اے پی سی آر کے زیر اہتمام مجسمہ امبیڈکر واقع ٹینک بنڈ پر ’’ ہندوستان میںتشدد اور عدم برداشت کے بڑھتے واقعات ‘‘ کے خلاف منعقدہ ایک احتجاجی دھرنے کے دوران یہ بات بتائی ۔ انہوں نے مزید کہاکہ پچھلے چھ ماہ کے اندر قومی سطح پر پیش آئے فرقہ وارانہ واقعات میں مرکز کی حکمران جماعت کے قائدین اورکارکنوں کے ملوث ہونے کے واضح انکشاف کے بعد بھی مرکزی قائدین بالخصوص وزیراعظم ہند اس قسم کے واقعات کی روک تھام کے لئے موثر اقدامات اٹھانے سے قاصر ہیں۔ انہوںنے مرکزی حکومت کو انتباہ دیتے ہوئے کہاکہ ہندوستان کی دوسری بڑی اکثریت مسلم اقلیت کے صبر کو کمزوری سمجھ کر ان کے ساتھ ناانصافیو ں کو جاری رکھنانریندر مودی حکومت کے لئے نقصاندہ ثابت ہوگا۔ سماجی جہدکار جیون کمار نے اس احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہندوتوا نظریہ پرعمل پیرا مرکزی حکومت ہندوستان کے تکثیر سماج کو باٹنے کاکام کررہی ہے تاکہ جمہوری ہندوستان کو ہندوراشٹرا میںتبدیل کیا جاسکے ۔انہوںنے مزیدکہاکہ ہندوستان کی مختلف ریاستوں میںگائے کے گوشت پر پابندی‘ پسماندگی کاشکار طبقات میںخوف ودہشت کا ماحول پید ا کرنے ‘ فرقہ پرستوںکے ناپاک چہروں کو بے نقاب کرنے والے مصنفین کاقتل عام‘ تعلیم عدلیہ اور پولیس میں زعفرانیت کا بڑھتا اثر یہ تمام چیزیں فرقہ پرست طاقتوں کی اس سازش کا حصہ ہیںجس کے ذریعہ وہ ہندوستان کوفرقہ پرستی کی آگ میں جھونک رہے ہیں ۔محمدافضل‘ عبدالستار‘ شریمتی جی شاردا ایڈوکیٹ‘ایم جی سائی بابا‘محترمہ عظمت قیام‘راما سوامی او ردیگر نے بھی اس میںحصہ لیا۔

TOPPOPULARRECENT