Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکزی حکومت پر تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کا الزام

مرکزی حکومت پر تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کا الزام

تلنگانہ میں شعبہ تعلیمات کو نقصان : اتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ 22 اگست (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کا مرکزی حکومت پر اور فیس ریمبرسمنٹ جاری نہ کرتے ہوئے تعلیمی شعبہ کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے کا ٹی آر ایس حکومت پر الزام عائد کیا۔ آج گاندھی بھون میں منعقدہ ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیپٹن اتم کمار ریڈی نے مودی اور کے سی آر نے انتخابی مہم کے دوران نوجوان اور طلبہ کو ہتھیلی میں جنت دکھائے ان کے وعدوں پر بھروسہ کرتے ہوئے نوجوان نے انہیں اقتدار حوالے کیا مگر این ڈی اے اور ٹی آر ایس حکومتوں کی 15 ماہی کارکردگی نے نوجوانوں اور طلبہ کی امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے۔ نئے نئے تعلیمی مواقع اور ملازمتیں فراہم کرنے میں دونوں حکومتیں ناکام ہوگئی ہیں۔ مودی آر ایس ایس کے خفیہ ایجنڈے پر عمل کرتے ہوئے نصابی تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کی منظم سازش پر عمل کررہے ہیں جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے۔ غریب عوام کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کیلئے صدر کانگریس مسز سونیا گاندھی حق تعلیم کا قانون نافذ کیا جس کو این ڈی اے حکومت نظرانداز کررہی ہے۔ تلنگانہ کے نوجوانوں نے تلنگانہ سے ناانصافی اور ملازمتیں حاصل ہونے کی امید سے تلنگانہ کی تحریک میں حصہ لیا جس سے متاثر ہوکر سونیا گاندھی نے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دیا ہے۔ کانگریس حکومت نے غریب طلبہ کو اعلیٰ تعلیم کے مواقع فراہم کرنے کیلئے فیس ریمبرسمنٹ اسکیم کا آغاز کیا۔ کے جی تا پی جی مفت تعلیم کا وعدہ کرنے والی ٹی آر ایس حکومت نہ اپنے وعدے کو عملی جامہ پہنایا اور نہ ہی فیس ریمبرسمنٹ کے دو ہزار کروڑ روپئے کے بقایا جات جاری کیا جس سے طلبہ اور ان کے سرپرستوں میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ اس اسکیم کو ختم کرنے کیلئے سینکڑوں تعلیمی ادارے بند کردیئے گئے ہیں۔ ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں ہر گھر کے ایک فرد کو ملازمت فراہم کرنے کا وعدہ کیا مگر ابھی ملازمت فراہم نہیں کی گئی۔

TOPPOPULARRECENT