Sunday , July 23 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکزی حکومت ہائیکورٹ کی تقسیم کیلئے تیار ‘ مرکزی وزیر

مرکزی حکومت ہائیکورٹ کی تقسیم کیلئے تیار ‘ مرکزی وزیر

ہائیکورٹ کے چھ ججس کا بھی عنقریب تقرر۔ وزیر قانون پی پی چودھری کا خطاب

حیدرآباد 18 جون ( این ایس ایس ) دونوں تلگو ریاستوں تلنگانہ وآندھرا پردیش کی جانب سے ہائیکورٹ کی تقسیم کی اپیلوں پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی وزیر قانون و انصاف مسٹر پی پی چودھری نے یہ واضح کیا کہ مرکزی حکومت ہائیکورٹ کی تقسیم کیلئے تیار ہے ۔ انہوں نے بی جے پی لیگل سیل کی جانب سے منعقدہ وکلا کی کانفرنس میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے ہائیکورٹ کے چھ ججس کی مخلوعہ جائیدادوں پر جلد ہی تقررات عمل میں لائے جائیں گے ۔ مرکزی حکومت کی جانب سے دیگر تقررات پر بھی غور کیا جائیگا اگر ہائیکورٹ کالیجیم کی جانب سے اس کی سفارش کی جاتی ہے ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ایک اور مرکزی وزیر مسٹر بنڈارو دتاتریہ نے کہا کہ نریندر مودی کی قیادت میں مرکزی حکومت کی جانب سے غریب عوام کی صحت کو اولین ترجیح دی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قلب کے آپریشن میںاستعمال کئے جانے والے اسٹنٹس کی قیمتوں کو حکومت نے کم سے کم کرتے ہوئے 20 ہزار روپئے کردیا ہے ۔ اس سے غریبوں کو فائدہ ہوگا ۔ تلنگانہ جدوجہد میں وکلا کے رول کی یاد دہانی کرواتے ہوئے دتاتریہ نے کہا کہ مرکزی حکومت ہائیکورٹ کی تقسیم کے حق میں ہے ۔ انہوں نے دونوں ہی ریاستوں سے اپیل کی کہ وہ ہائیکورٹ کی تقسیم کے عمل میں ایک دوسرے سے تعاون کریں۔ واضح رہے کہ حال ہی میں تلنگانہ راشٹرا سمیتی نے مرکزی حکومت پر حیدرآباد ہائیکورٹ کی تقسیم میں پس و پیش کرنے اور اس میں غیر ضروری تاخیر کرنے کا الزام عائد کیا تھا ۔ بی جے پی کے ریاستی صدر ڈاکٹر کے لکشمن نے بھی اس تقریب سے خطاب کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مرکز میں نریندرمودی کی قیادت میں حکومت انتہائی شفاف انداز میں کام کر رہی ہے جبکہ ریاست میں کے چندر شیکھر راؤ کی حکومت ایک ڈکٹیٹر شپ کی طرح خاندانی حکمرانی بن گئی ہے اور یہ ایک کرپٹ حکومت بھی ہوگئی ہے ۔ بی جے پی مقننہ پارٹی کے لیڈر جی کشن ریڈی ‘ رکن اسمبلی رام چندر ریڈی ‘ ایم ایل سی رام چندر راؤ اور دوسرے قائدین نے بھی اس پروگرام میں شرکت کی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT