Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / مرکزی حکومت 27 فیصد او بی سی کوٹہ ختم کرنے کوشاں

مرکزی حکومت 27 فیصد او بی سی کوٹہ ختم کرنے کوشاں

پروفیسر اور اسوسی ایٹ پروفیسر تقررات میں تحفظات پالیسی نظر انداز : لالو پرساد یادو کا الزام
پٹنہ 7 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) راشٹریہ جنتادل کے صدر لالو پرساد یادو نے آج ادعا کیا کہ مرکزی حکومت مرکزی جامعات میں پروفیسروں اور اسوسی ایٹ پروفیسروں کے تقررات میں او بی سی برادریوں کیلئے 27 فیصد تحفظات کے طریقہ کار کو ختم کر رہی ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکومت کا یہ اقدام دلت لیڈر ڈاکٹر امبیڈکر کے نظریہ کو ختم کرنے کی کوشش ہے ۔ تاہم یو جی سی کے ایک عہدیدار نے دہلی میں اوضح کیا کہ 2007 کے طئے شدہ قوانین کے مطابق ہر سطح پر تقررات میں 27 فیصد تحفظات کو برقرار رکھا گیا ہے اور تحفظات پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے ۔ یو جی سی کے 3 جون کو جاری کردہ مکتوب پر وزارت فروغ انسانی وسائل کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے لالو پرساد یادو نے ادعا کیا کہ در اصل آر ایس ایس او بی سی برادریوں کو تحفظات کی دستوری گنجائش سے کھلواڑ کر رہی ہے ۔ انہوں نے مرکز سے سوال کیا کہ او بی سی برادریوں کے تحفظات ختم کرتے ہوئے کس کو فائدہ پہونچانے کی کوشش کی جا رہی ہے ؟ ۔ یو جی سی نے مکتوب میں جو مرکزی جامعات کو روانہ کیا ہے کہا کہ وہ تحفظات کی پالیسی پر قواعد کے مطابق عمل کریں۔ کہا گیا ہے کہ تدریسی عہدوں کیلئے ایس سی برادری کیلئے 15 فیصد ‘ ایس ٹی برادری کیلئے 7.5 فیصد تحفظات ہیں اور یہ تینوں سطحوں جیسے اسسٹنٹ پروفیسر ‘ اسوسی ایٹ پروفیسر اور پروفیسر کیلئے ہیں جبکہ مکتوب میں مزید کہا گیا ہے کہ جہاں تک او بی سی زمرہ کے 27 فیصد تحفظات کا مسئلہ ہے وہ صرف اسسٹنٹ پروفیسر کے عہدہ کیلئے ہی قابل عمل ہے ۔ اس کے نتیجہ میں لالو پرساد یادو نے این ڈی اے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔

جیش محمد کے تین ارکان کی تحویل میں توسیع
نئی دہلی ۔ 7 جون ۔(سیاست ڈاٹ کام) دہلی کی عدالت نے دہشت گرد تنظیم جیش محمد کے تین مشتبہ ارکان کی عدالتی تحویل میں تقریباً ایک ماہ کی توسیع کردی ہے ۔ ان مبینہ طورپر قومی دارالحکومت میں حملے کے منصوبہ پر گرفتار کیا گیا تھا ۔ ایڈیشنل سیشن جج رتیش سنگھ نے استغاثہ کی درخواست کو قبول کرلیااور ان ملزمین محمد ساجد ، شاکر اور سمیر کو 5 جولائی تک عدالتی تحویل میں دیدیا۔

TOPPOPULARRECENT