Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / مرکزی و ریاستی حکومتوں سے اقلیتوں کے ساتھ انصاف رسانی پر زور

مرکزی و ریاستی حکومتوں سے اقلیتوں کے ساتھ انصاف رسانی پر زور

حکومتوں کی ناکامیوں پر تنظیم انصاف کا احتجاج ، سید عزیز پاشاہ کا خطاب و گرفتاری
حیدرآباد۔28اپریل(سیاست نیوز) مرکزی اور ریاستی حکومتیں اقلیتوں اور پسماندگی کاشکار دیگر طبقات کے ساتھ انصاف میںپوری طرح ناکام ہوچکی ہیں جبکہ مرکزی حکومت سب کا ساتھ سب کا وکاس کے نعرے پر اقتدار حاصل کرنے کے بعد صرف ایک مخصوص طبقے کی ترقی کے لئے کام کررہی ہے ۔قومی صدر تنظیم انصاف وسابق رکن پارلیمنٹ راجیہ سبھا جناب سیدعزیز پاشاہ خیریت آباد چوراہے پر مرکزی اور ریاستی حکومتیں جواب دو حساب دو کے عنوان پر کل ہند تنظیم انصاف کے معلنہ احتجاجی پروگرام کے آغاز سے قبل ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کے دوران ان خیالات کا اظہار کررہے تھے۔تنظیم انصاف تلنگانہ کے ریاستی صدر میراحمد علی ‘ جنرل سکریٹری منیر پٹیل‘ گریٹر حیدرآباد صدر سید کلیم الدین عسکر کے علاوہ تنظیم انصاف کے سینکڑوں کارکن بھی اس موقع پر موجو دتھے۔ جناب سید عزیز پاشاہ نے نریندر مودی حکومت کو اقلیتوں اورتعلیمی ومعاشی پسماندگی کاشکار دیگر طبقات کے ساتھ ناانصافی کا ذمہ دارقراردیتے ہوئے کہاکہ سب کا وکاس کا نعرے لگانے والے نریندر مودی اقتدار میں آنے کے بعد صرف کارپوریٹ طبقے کے وکاس کے لئے کام کررہے ہیں۔ انہوں نے غریب اقلیتی طبقات کو ان کے حق سے محروم رکھنے کا بھی مرکزی حکومت پر الزام عائد کیا ۔ عزیز پاشاہ نے کہا کہ نریندر مودی نے ترقی کے لئے راجستھان کے جس ضلع کی ذمہ داری لی ہے وہاں پر ایک فیصد اقلیتی طبقے کی آبادی بھی نہیںہے اور نریندر مودی کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اترپردیش کے سولہ اراکین پارلیمنٹ نے بھی وہی طریقہ کار اپنایا ہے جس سے صاف پیغام مل رہا ہے موجودہ مرکزی حکومت اقلیتوں کی ترقی کے متعلق غیر سنجیدہ ہے ۔ جناب سیدعزیز پاشاہ نے ہریانہ کی بی جے پی حکومت پر مجالس مقامی اور پنچایت انتخابات میںکم ازکم تعلیم کے لزوم کے ذریعہ اقلیتوں کو دلت طبقات کو انتخابات سے دورکھنے کی سازش کا الزام عائد کیا۔ انہوںنے کہاکہ مذکورہ قانون کی وجہہ سے ستر فیصد دلت اور مسلم امیدوار انتخابات میںحصہ لینے سے محروم رہے ۔  انہوں نے ریاستی حکومت پر بھی اقلیتوں کے ساتھ ناانصافی کاالزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ تلنگانہ میںمسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہم ریاست کی برسراقتدار جماعت کا انتخابی وعدہ تھا جس پر عمل آوری میںحکومت اب تک ناکام ہے جبکہ ریاستی حکومت ریاست کے مجموعی بجٹ میں0.29فیصد حصہ ہی اقلیتوں کے لئے مختص کررہی ہے جس میں سے صرف چالیس فیصد خرچ کیاجاتا ہے اور ماباقی رقم دیگر محکموں کے حوالے کردی جاتی ہے ۔بعد ازاں تنظیم انصاف کے معلنہ احتجاج چلو راج بھون کے آغازسے قبل ہی عزیز پاشاہ بشمول احتجاج میںشریک تنظیم انصاف کے تمام قائدین کو پولیس نے حراست میںلے کر گاندھی نگر پولیس اسٹیشن منتقل کردیا۔

TOPPOPULARRECENT