Saturday , October 21 2017
Home / سیاسیات / مرکز کی جانب سے سبسیڈی کی حد مقرر

مرکز کی جانب سے سبسیڈی کی حد مقرر

کیروسین پر 12 روپئے فی لیٹر اور ایل پی جی پر فی کیلو 18 روپئے
نئی دہلی 10 اگست (سیاست ڈاٹ کام ) حکومت نے کیروسین پر سبسیڈی ادائیگی کی حد 12 روپئے فی لیٹر اور گھریلو پکوان گیس (ایل پی جی ) کیلئے 18 روپئے فی کیلو مقرر کی ہے۔ وزیر ٹیلی کام دھرمیندر پردھان نے آج یہ بات بتائی۔ کیروسین کو عوامی نظام تقسیم کے تحت 14.96 روپئے فی لیٹر فروخت کیا جارہا ہے جبکہ اصلی قیمت 29.91 روپئے ہے ۔ ان دونوں قیمتوں میں 14.95 روپئے فی لیٹر کے فرق کو ’’ریونیو خسارہ ‘‘ قرار دیا جارہا ہے۔ حکومت کی جانب سے کیروسین پر جہاں 12 روپئے سبسیڈی فراہم کی جارہی ہے وہیں مابقی 2.95 روپئے کی رقم تیل کی پیداوار کے حامل او این جی سی اور آئیل انڈیا لمیٹیڈ ادا کریں گی۔ اسی طرح 14.2 کیلو کے سبسیڈی کے حامل ہر ایل پی جی گیس سلنڈر پر 167.18روپئے کا ریونیو خسارہ ہورہا ہے۔ سبسیڈی پر ایل پی جی سلنڈر کی موجودہ قیمت 417.82 روپئے ہے۔ پردھان نے کہا کہ سرکاری تیل کی کمپنیاں صرف کیروسین اور سبسیڈی پر گھریلو ایل پی جی کا ریونیو خسارہ برداشت کررہی ہیں کیونکہ پٹرول اور ڈیزل کو بالترتیب جون 2010اور اکٹوبر 2014 میں سرکاری کنٹرول سے آزاد کردیا گیا ہے۔ ہر گھر کو سبسیڈی قیمت 417.82 روپئے پر 12 ایل پی جی سلنڈرس سربراہ کئے جاتے ہیں اور ہر سلنڈر پر 167.18 روپئے ریونیو خسارہ مکمل حکومت برداشت کرتی ہے۔ سرکاری عہدیدار نے بتایا کہ ایل پی جی کیلئے سبسیڈی کی رقم چونکہ راست صارفین کے کھاتہ میں منتقل کی جارہی ہے اسی لئے حکومت نے پوری رقم برداشت کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT