Thursday , May 25 2017
Home / Top Stories / مرکز کی کشمیر پالیسی مکمل طور پر ناکام: سیتا رام یچوری

مرکز کی کشمیر پالیسی مکمل طور پر ناکام: سیتا رام یچوری

فوج سے حکومت کی صرف زبانی ہمدردی ، خاموشی توڑنے کیلئے اور کتنی اموات چاہئیں

نئی دہلی۔ 15 فروری (سیاست ڈاٹ کام) کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (مارکسسٹ) نے آج مرکز کی مبینہ خاموشی اور فوجیوں کی کشمیر میں گزشتہ تین دنوں سے ہلاکتوں پر سخت اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ اس سے اس بات کی توثیق ہوتی ہے کہ مرکز کی کشمیر پالیسی مکمل طور پر اس بات کو تسلیم کرنے سے قاصر ہے کہ حکومت کی جانب سے اختیار کردہ پالیسیوں اور کارروائیاں صدمہ انگیز ہیں۔ سی پی آئی ایم کے جنرل سیکریٹری سیتا رام یچوری نے صدمہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی منظر نامہ پر مرکز کی جانب سے فوجیوں کی ہلاکت پر مکمل خاموشی انتہائی قابل اعتراض ہے۔ اس سے اس بات کا ثبوت ملتا ہے کہ حکومت، فوج کے ساتھ صرف زبانی ہمدردی جتاتی ہے جبکہ اس کا عمل اس کے قول کے بالکل برعکس ہے۔ انہوں نے صدمہ کا اظہار کرتے ہوئے اظہار حیرت کیا کہ کیا برسراقتدار بی جے پی فوج سے کوئی ہمدردی نہیں ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ مودی اور ان کی حکومت ان اموات کے بارے میں خاموش کیوں ہے اور ان کی زبانی ہمدردی اور مسلح افواج کو نصیحتیں جو صرف انتخابی تقریروں تک محدود ہیں، انتہائی صدمہ انگیز اور افسوسناک ہیں۔ یچوری نے فیس بُک پر اپنا بیان شائع کرتے ہوئے واضح طور پر بی جے پی کی جانب سے فوج کے سرحد پار سرجیکل حملوں کی ستائش کا تذکرہ کیا جو گزشتہ ستمبر میں خط قبضہ کے پار پاکستانی مقبوضہ کشمیر کی سرزمین پر کئے گئے تھے۔

انہوں نے فوجیوں کی ہلاکت پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے جاننا چاہے کہ حکومت کو کتنی اموات کی ضرورت ہے تاکہ اس کی خاموشی ٹوٹ سکے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کیا اموات کی موجودہ تعداد اور فوج کی ملک کیلئے قربانیاں مہر خاموشی توڑنے کیلئے کافی نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 4 فوجی بشمول ایک میجر اور اتنی ہی تعداد میں عسکریت پسند ہلاک اور دیگر 8 فوجی اور شہری زخمی ہوگئے جبکہ وادیٔ کشمیر میں کل انکاؤنٹر کے دو واقعات پیش آئے۔ یہ واقعات اس وقت پیش آئے جبکہ 4 عسکریت پسند اور 2 فوجی جنوبی کشمیر میں فائرنگ کے تبادلے میں ہلاک ہوگئے تھے۔ ضلع کلگام میں انکاؤنٹر کے واقعہ میں دو شہری ہلاک ہوئے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT