Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / مرکز کے عدم تعاون پر کشمیر میں حکومت ممکن نہیں: محبوبہ

مرکز کے عدم تعاون پر کشمیر میں حکومت ممکن نہیں: محبوبہ

جموں /5 فروری (سیاست ڈاٹ کام) پی ڈی پی کی سربراہ محبوبہ مفتی نے اپنا موقف سخت کرتے ہوئے آج واضح کردیا کہ اگر نریندر مودی جموں و کشمیر کے لئے اعتماد سازی اقدامات کے عہد کے ذریعہ سازگار ماحول پیدا نہیں کرتے ہیں تو اس ریاست میں وہ بی جے پی کے ساتھ نئی حکومت تشکیل نہیں دیں گی۔ محبوبہ مفتی نے آج یہاں ایک اجلاس میں پارٹی قائدین کو بتایا کہ اس ریاست میں مسائل کے اندر مسائل ہیں، ان مشکلات سے نمٹنے کے لئے ہمیں تائید و حمایت درکار ہے اور تشکیل حکومت کے لئے سازگار ماحول چاہئے۔ اگر ہمیں ایسا ماحول ملتا ہے تو یہ بہت اچھا ہے، لیکن اگر ایسا نہیں ہوتا ہے تو ہم اسی طرح کا رویہ برقرار رکھیں گے، جس طرح کا آج ہے۔ اپنے بھائی تصدق مفتی اور سینئر پی ڈی پی لیڈر مظفر حسین بیگ کے ساتھ میٹنگ میں شرکت کرتے ہوئے محبوب مفتی نے اشارہ دیا کہ وہ کوئی اقتصادی پیکیج کے لئے کوشاں نہیں ہیں، بلکہ انھیں اعتماد سازی اقدامات مطلوب ہیں، جو مسئلہ کے سیاسی پہلو پر توجہ مرکوز کریں۔ انھوں نے کہا کہ معاملہ رقم کا نہیں ہے، ایسا بھی نہیں کہ کتنی رقم آئی اور ہم نے کتنی خرچ کی؟۔ یہ سوال بھی نہیں کہ یہ رقم کب آئی؟ بلکہ مسئلہ یہ ہے کہ ہم کس طرح سازگار ماحول پیدا کریں گے، تاکہ نئی حکومت کو نئی راہ اور جہت مل سکے، جس کے بل بوتے پر عوام میں خیرسگالی کا ماحول پیدا کیا جاسکے۔ محبوبہ مفتی کے ریمارکس اس ریاست میں بی جے پی کے ساتھ مخلوط حکومت کی تشکیل کے بارے میں ان کے موقف میں سختی کی عکاسی کرتے ہیں، جب کہ یہ ریاست 8 جنوری سے گورنر راج کے تحت ہے، جس سے ایک روز قبل ان کے والد اور اس وقت کے چیف منسٹر مفتی محمد سعید کا انتقال ہوا تھا۔ 87 رکنی اسمبلی میں پی ڈی پی 27 ارکان رکھتی ہے، جب کہ بی جے پی کے 25 لیجسلیٹرس ہیں۔ ان دونوں جماعتوں نے مفتی سعید کے انتقال سے قبل دس ماہ مخلوط حکومت چلائی۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ جموں و کشمیر اس ملک کی کسی دیگر ریاست کی مانند نہیں، اس لئے ہمیں مختلف انداز میں آگے بڑھنا ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT