Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / مسئلہ ایودھیا کی یکسوئی اپریل 2018ء تک مہلت

مسئلہ ایودھیا کی یکسوئی اپریل 2018ء تک مہلت

مسلم اداروں پر رکاوٹیں پیدا کرنے کا الزام : سبرامنیم سوامی
نئی دہلی ۔ 22 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے سینئر لیڈر سبرامنیم سوامی نے الزام عائد کیا ہیکہ رام جنم بھومی ۔ بابری مسجد تنازعہ کی یکسوئی میں  مسلم ادارے رکاوٹیں پیدا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلہ کی یکسوئی کی عبوری حد اپریل 2018ء ہوگی۔ سوامی نے کہا کہ ایودھیا تنازعہ کے بیرونی عدالت تصفیہ کیلئے سپریم کورٹ کی تجویز پر مسلم تنظیموں نے شکوک اور ناامیدی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں (مسلم قائدین) نے کہا ہیکہ ماضی میں بھی ایسی کوششیں ناکام ہوچکی ہیں جس سے ظاہر ہوتا ہیکہ وہ (مسلم قائدین) اس مسئلہ کی یکسوئی کی کوشش میں رکاوٹ ڈالنے یا اس کو تاخیر پذیری کے ساتھ لیت و لعل میں ڈالنا چاہتے ہیں لیکن اس مسئلہ کی یکسوئی کی بابری حد اپریل 2018ء ہوگی۔ تاہم سوامی نے اپریل 2018ء کے بابری حد ہونے کے مطلب کے بارے میں کوئی وضاحت نہیں کی۔

TOPPOPULARRECENT