Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / مسئلہ رام مندر پر خاموش رہنے بی جے پی کا فیصلہ : کٹیار

مسئلہ رام مندر پر خاموش رہنے بی جے پی کا فیصلہ : کٹیار

فیض آباد ۔9 جنوری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) مذہب کے نام پر ووٹ مانگنے کو رشوت اور بدعنوانی کا عمل قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ کی حال ہی میں جاری رولنگ کے پس منظر میں بی جے پی کے ایک رکن پارلیمنٹ ونئے کٹیار نے آج کہا کہ اُترپردیش اسمبلی انتخابات کی مہم کے دوران کی پارٹی رام مندر کے مسئلہ پر خاموش رہے گی ۔ راجیہ سبھا کے رکن کٹیار نے پی ٹی آئی سے کہا ’’ یہ اگرچہ ہمارا شخصی اعتقاد ہے لیکن اعتقاد بھی مذہب کے زمرہ میں آتا ہے چنانچہ ہم انتخابی مہم کے دوران رام اور مندر کے مسئلہ پر خاموش رہیں گے ‘‘ ۔ سپریم کورٹ نے گزشتہ ہفتہ اپنے اکثریتی فیصلہ میں کہا تھا کہ ’’مذہب ، ذات پات ، علاقہ اور زبان کے نام پر ووٹ دینے کی کوئی اپیل بھی رشوت اور بدعنوانی کا عمل ہوتی ہے ‘‘ ۔ ونئے کٹیار 1990 ء کی دہائی میں ایودھیا میں رام مندر تحریک کا چہرہ سمجھے جاتے تھے ۔ انھوں نے ماضی میں کہا تھاکہ مودی حکومت کو چاہئے کہ وہ متنازعہ مقام پر سپریم کورٹ کے فیصلہ کا انتظار کئے بغیر اس مسئلہ کے حل پر پیشرفت کریں۔ تاہم اُترپردیش میں بی جے پی کے ریاستی ترجمان وجئے بہادر پاٹھک نے مجوزہ انتخابات میں رام مندر کا مسئلہ اُٹھانے کے بارے میں کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کیا اور کہا کہ ’’رام مندر کوئی سیاسی مسئلہ نہیں ہے بلکہ ہمارا اعتقاد ہے ‘‘ ۔

TOPPOPULARRECENT