Monday , July 24 2017
Home / دنیا / مسئلہ فلسطین کی یکسوئی کیلئے ٹرمپ ثالثی کے خواہاں

مسئلہ فلسطین کی یکسوئی کیلئے ٹرمپ ثالثی کے خواہاں

واشنگٹن ۔ 23 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے نومنتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان تنازعے کے حل کے لیے امن معاہدہ کرانے کے خواہاں ہیں۔انھوں نے امریکہ کے موقر روزنامے نیویارک ٹائمز کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ”میں ایک ایسا شخص بننا چاہتا ہوں جو اسرائیل اور فلسطین کے درمیان امن چاہتا ہے اور یہ ایک بہت بڑی کامیابی ہوگی”۔نیویارک ٹائمز کے ایک رپورٹر نے ایک ٹویٹ میں لکھا ہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ نے یہ بھی کہا ہے کہ ان کے داماد جیرڈ کوشنر اس ڈیل کی ثالثی میں مددگار ثابت ہوسکتے ہیں۔ٹرمپ کی بیٹی آئیفانکا کے خاوند کوشنر ایک آرتھوڈکس یہودی خاندان سے تعلق رکھتے ہیں۔وہ حالیہ انتخابی مہم کے دوران ٹرمپ کے قریبی معاون کے طور پر ان کے ساتھ ساتھ رہے ہیں۔انھوں نے 8 نومبر کو صدارتی انتخابات کے بعد اپنے خسر ٹرمپ کو وائٹ ہاؤس میں دی جانے والی سکیورٹی بریفنگز میں بھی رسائی کا مطالبہ کیا تھا۔کوشنر اور ان کی اہلیہ ڈونالڈ ٹرمپ کی جاپانی وزیراعظم شینزو ایبے کے ساتھ 17 نومبر کو ملاقات میں بھی موجود تھے۔یہ نومنتخب امریکی صدر کی کسی غیرملکی لیڈر سے پہلی ملاقات تھی۔ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے بیت المقدس (یرشیلم) منتقل کرنے کا بیان داغا تھا

اور کہا تھا کہ بیت المقدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کیا جانا چاہیے۔اس بیان پر فلسطینیوں اور عربوں نے سخت ردعمل کا اظہار کیا تھا۔اسرائیل کے دائیں بازو کے انتہاپسند ڈونالڈ ٹرمپ کی صدارتی انتخاب میں جیت پر خوشی کے شادیانے بجا رہے ہیں اور انھیں امید ہے کہ وہ ان کے دور حکومت میں مقبوضہ مغربی کنارے اور بیت المقدس میں یہودی آباد کاری کے عمل کو تیز کرسکیں گے۔وہ یہ بھی سوچ رکھتے ہیں کہ اس سے آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کی تجویز ہی ختم کی جاسکتی ہے۔اسرائیلی میڈیا کے مطابق گذشتہ ہفتے اسرائیلی وزیر دفاع ایویگڈور لائبرمین نے کہا تھا کہ ٹرمپ کے معاونین نے اسرائیل کے دائیں بازو کے سیاست دانوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ان کی جیت پر جشن منانے کا سلسلہ اب بند کردیں۔واضح رہے کہ امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری کئی مہینوں کی کوششوں کے بعد بھی اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان تعطل کا شکار امن مذاکرات بحال کرانے میں ناکام رہے ہیں۔فریقین کے درمیان گذشتہ ڈھائی سال سے براہ راست بات چیت منقطع ہے اور صدر براک اوباما کے دور حکومت میں اسرائیلی ،فلسطینی تنازعے کے حل کے ضمن میں کوئی بھی پیش رفت نہیں ہوسکی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT