Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے ہند۔ پاک مذاکرات کا احیاء ناگزیر

مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے ہند۔ پاک مذاکرات کا احیاء ناگزیر

قیام امن کے بغیر خوشحالی ناممکن۔ صدرنیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا بیان
سرینگر۔/14اکٹوبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) نیشنل کانفرنس کی زیر قیادت اپوزیشن جماعتوں نے آج کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے ہندوستان اور پاکستان و مذاکرات کا احیاء کرنا چاہیئے اور مرکز کو بھی اس مسئلہ پر سیاسی عمل شروع کردینا چاہیئے۔ اپوزیشن جماعتوں کے قائدین بشمول کانگریس اور سی پی ایم کے اجلاس کی صدارت کے بعد صدر نیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں قیام امن کیلئے ہم سب فکر مند ہیں۔ ہندوستان اور پاکستان کو چاہیئے کہ بات چیت کے میز پر بیٹھ کر اس مسئلہ کا حل تلاش کریں۔ انہوں نے کا کہا کہ ہمارے مسئلہ ( کشمیر ) کا حل صرف مذاکرات میں مضمر ہے جنگ سے کوئی نتائج برآمد نہیں ہوسکتے۔ کشمیر میں اٹل بہاری واجپائی کی سال 2012 میں کی گئی تقریر کا حوالہ دیتے ہوئے ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے بتایا کہ دوست تبدیل کئے جاسکتے ہیں لیکن پڑوسی نہیں۔ اگر ہم پڑوسی ملک کے ساتھ پرامن زندگی گذاریں گے تو خوشحالی در آئیگی، اگر ہم تصادم کی راہ اختیار کریں گے تو ترقی میں رکاوٹ پیدا ہوگی اور ہماری قوت ارادیت بھی متاثر ہوجائے گی۔ وادی کشمیر کی موجودہ صورتحال کو خطرناک قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کو امن کیلئے متحدہ کوشش کرنی چاہیئے اور اس خصوص میں سیاسی عمل فی الفور شروع کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ایک سیاسی مسئلہ ہے اور وزیر اعظم نے بھی یہ اعتراف کیا ہے کہ تمام فریقوں بشمول حریت کانفرنس کے ساتھ مذاکرات کے ذریعہ مسئلہ کا حل تلاش کیا جاسکتا ہے اور جیسے ہی مذاکرات کا عمل شروع کردیا جائے گا تمام سیاسی قیدیوں اور جاریہ احتجاج کے دوران گرفتار نوجوانوں کو رہا کردینا چاہیئے۔
اپوزیشن جماعتوں کا یہ بھی مطالبہ ہے کہ کشمیر میں پلیٹ گنس کے استعمال سے اموات اور بینائی سے محرومی کے واقعات کی تحقیقات اور قصورواروں کا پتہ چلانے کیلئے ریٹائرڈ سپریم کورٹ جج کی قیادت میں ایک کمیشن تشکیل دیا جائے۔ سابق چیف منسٹر نے کہا کہ اگر حکومت وادی کشمیر کی صورتحال بہتر بنانے کیلئے سنجیدہ ہے تو سیکوریٹی فورسس کو عوام کے مکانات تہس نہس اور ہراساں کرنے سے باز رکھنا چاہیئے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر حل کرلیا گیا تو دہشت گردی از خود ختم ہوجائے گی۔

TOPPOPULARRECENT