Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / مسئلہ کشمیر کے تمام فریقین کو اعتماد میں لینے کا اعلان

مسئلہ کشمیر کے تمام فریقین کو اعتماد میں لینے کا اعلان

بحری دہشت گردی ایک بڑا خطرہ برقرار، مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کی پریس کانفرنس
پاناجی ؍ واسکو ۔ 9 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) یہ کہتے ہوئے کہ حکومت مسئلہ کشمیر کے تمام فریقین کو اعتماد میں لے گی جبکہ وادی کشمیر میں معمول کے حالات اور امن بحال کرنے کے اقدامات کا آغاز کیا جائے گا، مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ عوام کیلئے بے چینی کو زیادہ دن تک برداشت کرنا بہت مشکل ہے۔ حکومت اپنے طور پر وہاں کی صورتحال بہتر بنانے کے اقدامات کررہی ہے۔ عوام سے ربط پیدا کیا گیا ہے۔ کل جماعتی وفد کے اجلاس نے نمایاں تبدیلی پیدا کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کل جماعتی وفد کی سفارشات پر غور کررہی ہے۔ اس وفد نے حال ہی میں وادی کشمیر کا دورہ کیا تھا اور صورتحال کا جائزہ لیا تھا۔ مرکزی وزیرداخلہ نے کہا کہ عوام کا احساس ہیکہ امن اور معمول کے حالات بحال کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کی صورتحال میں بہتری پیدا ہورہی ہے۔ مرکز وادی میں ترقی اور روزگار کی فراہمی میں مدد دے گا۔ نوجوانوں کیلئے روزگار کے مواقع پیدا کرنے ریاست میں 10 ہزار خصوصی پولیس عہدیداروں کی بھرتی کی جائے گی۔ ترقیاتی کام جاری ہیں۔ مرکزی حکومت نے ترقی کے تمام کاموں کیلئے مالیا فراہم کیا ہے۔ 2015ء سے سرحد پار دراندازی میں بھی کمی ہوچکی ہے۔ 2016ء میں اس میں اضافہ ہوا جو فوج اور نیم فوجی فورسیس کیلئے باعث تشویش ہے جنہوں نے دہشت گردوں کا صفایا کردیا ہے۔ واسکو سے موصولہ اطلاع کے بموجب مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے آج بحری دہشت گردی کو ایک بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے صیانتی آڈٹ کا آغاز کیا ہے تاکہ سمندروں میں مخدوش علاقوں کی شناخت کی جاسکے اور ساحلی علاقہ میں مخدوش علاقوں کی فہرست تیار کی جاسکے۔ ساحلی محافظین کے بحری جہاز ’’سارتھی‘‘ کا افتتاح کرنے کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مابعد ممبئی دہشت گرد حملہ بحری صیانت سے متعلق مسائل کی یکسوئی کرنا ضروری ہوگیا ہے۔ دہشت گرد سمندر کے راستے سے دہشت گردی کررہے ہیں۔ یہ ایک بڑا خطرہ بن گیا ہے۔ ہندوستان کا ساحلی علاقہ بہت طویل ہے۔ کئی بڑے شہر اس میں شامل ہیں۔ علاوہ ازیں دفاعی تنصیبات بھی ساحلی علاقوں میں واقع ہے۔ اس لئے ہم نے صیانتی آڈٹ کا سلسلہ شروع کردیا ہے۔ پریس کانفرنس میں راجناتھ سنگھ کے ساتھ وزیردفاع منوہر پاریکر بھی موجود تھے۔ مرکزی وزیرداخلہ نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ایک جامع اور یکجہت ساحلی صیانتی اسکیم شروع کردی ہے تاکہ ہندوستان کے ساحلی نیٹ ورک کو مستحکم کیا جاسکے۔ بہتر ہم آہنگی کیلئے ہمارے محکموں کو ساحلی صیانت کی ذمہ داری سونپی جارہی ہے۔ ساحلی محافظین کے ڈائرکٹر جنرل کو کمانڈر ساحلی صیانت بھی مقرر کیا گیا ہے۔ سمندروں کا قانون فطری طور پر ہماری صیانتی ڈھال ہے۔

TOPPOPULARRECENT