Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / مسجد اقصیٰ میں دوسرے روز بھی جھڑپیں

مسجد اقصیٰ میں دوسرے روز بھی جھڑپیں

پولیس پر سنگباری  زخمی یہودی فوت ‘ یہودیوں سیاحوں کو ہراسانی سے بچانے داخل ہونے پولیس کا ادعا
یروشلم ۔14ستمبر( سیاست ڈاٹ کام ) مسلمانوں اور اسرائیلی پولیس میں یروشلم کے دھماکو صورتحال والے مقام مسجد اقصیٰ کے احاطہ میں آج مسلسل دوسرے دن بھی جھڑپیں ہوئیں جس کے نتیجہ میں تین افراد کو گرفتار کرلیا گیا ۔ پولیس مسجد کے احاطہ میں داخل ہوگئی جس پر نقاب پوش نوجوان فرار ہوکر مسجد میں روپوش ہوگئے اور پولیس پر سنگباری کی ۔ پولیس نے کہا کہ وہ پہاڑ کی چوٹی پر قائم مسجد میں اس لئے داخل ہوئے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ مسلم نوجوان جو یہاں نماز ادا کررہے تھے یہودیوں یا سیاحوں کو ہراساں نہ کریں جو علی الصبح اس مقام کے مشاہدہ کیلئے پہنچتے ہیں ۔ پولیس کے بیان میں کہا گیا ہے کہ تین احتجاجیوں کو گرفتار کرلیا گیا اور منصوبہ کے مطابق اس مقام کی طلایہ گردی جاری ہے جو اسلام میں تیسرا مقدس ترین مقام ہے اور یہودی گنبد صخرٰی کی حیثیت سے اس کا احترام کرتے ہیں ۔ گیٹ کے باہر ایک صحافی نے ایک یہودی سیاح کو جو مسجد کے احاطہ سے واپس ہورہا تھا باہر موجود مسلمانوں کے ساتھ ہاتھا پائی کرتے دیکھا ۔ غیر مسلموں کو مسجد کے احاطہ میں دورہ کی اجازت ہے لیکن انہیں عبادت کرنے یا اپنی قومی علامات کا مظاہرہ کرنے کی اجازت نہیں ہے کیونکہ اس سے مسلمان مصلیوں میں کشیدگی کا خوف ہوتا ہے ۔ مسلمانوں کو اندیشہ ہے کہ اسرائیل اس مقام کے متعلق قوانین میں تبدیلی کردیگا ۔ انتہا پسند یہودی تنظیمیں دباؤ ڈال رہی ہیں کہ انہیں رسائی دی جائے ۔ بعض غیر معمولی تنظیمیں ایک نیا ہیکل بھی تعمیر کرنے کی کوشش کرچکی ہیں ۔ اسرائیل نے 1967ء کی چھ روزہ جنگ کے دوران مشرقی یروشلم پر قبضہ کرلیا تھا جہاں مسجد اقصیٰ شامل ہے اور بعد ازاں اس کا الحاق کرلیا تھا لیکن بین الاقوامی برادری نے اس الحاق کو تسلیم نہیں کیا ۔ اسرائیلی پولیس کے بموجب ایک یہودی اپنے زخموں سے جانبر نہ ہوسکا جو اسکی کار پر سنگباری کے نتیجہ میںآئے تھے ۔ پولیس کی ترجمان لوبا سامری نے کہا کہ یہ شخص اُس وقت زخمی ہوگیا جب اسکی گاڑی پر حملہ کیا گیا ، یہودی سال نو کی دعوت سے واپس ہورہا تھا ۔ حملہ آوروں کی شناخت نامعلوم ہے لیکن امکان ہے کہ وہ قریبی عرب پڑوسی علاقہ کے ساکن ہوں ۔ بعد ازاں پولیس و فلسطینیوں کے درمیان جھڑپ ہوگئی۔ فلسطینی سنگباری کررہے تھے ‘ یہ جھڑپ یروشلم کے انتہائی حساس مقدس مقام پر ہوئی ۔ لوباسامری نے کہا کہ فلسطینیوں نے مسجد کی حفاظت کو یقینی بنانے سے اندر داخل ہونے والے پولیس عہدیداروں پر سنگباری کی ۔ کئی افراد گرفتار کرلئے گئے ۔

TOPPOPULARRECENT