Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / مسجد گٹلہ بیگم پیٹ میں ڈپٹی چیف منسٹر اور ایڈیٹر سیاست کی مصلیوں سے ملاقات

مسجد گٹلہ بیگم پیٹ میں ڈپٹی چیف منسٹر اور ایڈیٹر سیاست کی مصلیوں سے ملاقات

کئی بورڈس کے صدور ، ڈپٹی مئیر اور محمد فاروق حسین ایم ایل سی نے بھی مسجد کا معائنہ کیا
حیدرآباد ۔ 9 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : گٹلہ بیگم پیٹ کی عالیشان مسجد کا شمار ہماری ریاست کی وسیع و عریض اور فن تعمیر کی شاہکار مساجد میں ہوتا ہے ۔ اس مسجد کی تعمیر اور اس کی 90 ایکڑ قیمتی اوقافی جائیدادوں کی صیانت میں جن اداروں اور شخصیتوں نے حصہ لیا اللہ تعالیٰ ان شاء اللہ انہیں بہترین اجر عطا فرمائیں گے ۔ ویسے بھی حیدرآباد فرخندہ بنیاد کو نہ صرف ہندوستان بلکہ ساری دنیا میں یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہاں کے مسلمان مساجد کو آباد کرنے میں پیش پیش رہتے ہیں ۔ غریبوں ، محتاجوں ، بے بسوں ، بے کسوں ، لاچاروں ، اور کمزوروں کی ہر لحاظ سے مدد کے لیے بھی وہ فوراً اُٹھ کھڑے ہوتے ہیں ۔ اور روزنامہ سیاست اس قسم کے کاموں اور تحریکات میں قائدانہ رول ادا کرتا ہے ۔ ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں نے ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی اور اپنے دیگر رفقاء کے ساتھ نماز جمعہ مسجد گٹلہ بیگم پیٹ میں ادا کی ۔ آپ کو بتادیں کہ اس مسجد کی تعمیر میں جناب احمد نواز خاں کا اہم کردار رہا ہے ۔ جب کہ روزنامہ سیاست اور ملت کے درد مند دوسرے ادارے و شخصیتیں اس مسجد کے تحت 90 ایکڑ قیمتی اوقافی اراضی کے تحفظ کو یقینی بنانے میں جٹے ہوئے ہیں ۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی اور ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کے ہمراہ ڈپٹی مئیر بابا فصیح الدین ، محمد فاروق حسین ایم ایل سی ، تلنگانہ کھادی اینڈ ویلیج بورڈ کے صدر نشین مولانا یوسف زاہد ، جناب عنایت علی باقری صدر نشین سٹ ون ، جناب سید اکبر حسین صدر نشین اقلیتی مالیاتی کارپوریشن ، فیض عام ٹرسٹ کے سکریٹری جناب افتخارحسین نے بھی مسجد میں نماز جمعہ ادا کی اور مصلیوں سے فرداً فرداً ملاقات کی ۔ ساتھ ہی مسجد کا تفصیلی معائنہ بھی کیا ۔ مفتی محمد میاں نے خطبہ دیا ۔ اس مسجد میں عام طور پر 3500 سے زائد مصلی نماز جمعہ ادا کرتے ہیں تاہم رمضان المبارک میں ان کی تعداد میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے ۔ مصلیان مسجد نے ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمود علی اور جناب زاہد علی خاں کو بتایا کہ عیدگاہ گٹلہ بیگم پیٹ کی قیمتی اراضی کے تحفظ کے لیے جو اقدامات کئے گئے وہ قابل ستائش ہیں ۔ واضح رہے کہ اس مسجد میں بہ یک وقت 7000 مصلیوں کی گنجائش ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT