Thursday , October 19 2017
Home / Top Stories / مسعود اظہر پر امتناع کو روکنے کے فیصلے کی مدافعت

مسعود اظہر پر امتناع کو روکنے کے فیصلے کی مدافعت

درخواست ‘ قوانین کے مطابق ہونا ضروری ۔ ہندوستان کی تنقیدوں پر چین کا رد عمل
بیجنگ 8 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) چین نے آج دوسری مرتبہ بھی اقوام متحدہ کی جانب سے پاکستان سے کام کرنے والے جئیش محمد تنظیم کے سربراہ مسعود اظہر پر امتناع عائد کرنے کی کوشش کو فنی بنیاوں پر روکدینے کے فیصلے کی مدافعت کی ہے ۔ ہندوستان نے اقوام متحدہ سے خواہش کی تھی کہ مسعود اظہر پر امتناع عائد کیا جائے ۔ چین کے اس اقدام کے بعد متعلقہ فریقین کو مزید مشاورت اور تبادلہ خیال کا وقت مل گیا ہے ۔ مسعود اظہر پر امتناع کی دوسری کوشش کو روک دینے پر ہندوستان کی تنقیدوں کا جواب دیتے ہوئے چینی وزارت خارجہ نے کہا کہ سکی بھی رکن ملک کی درخواست اگر 1267 کمیٹی سے رجوع کی جاتی ہے تو اسے لازمی طور پر اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی متعلقہ قرار دادوں کی پابندی کرنی ضروری ہوتی ہے ۔ حالانکہ چین 15 رکنی سلامتی کونسل کا واحد رکن ہے جس نے مسعود اظہر پر امتناع کی مخالفت کی ہے ۔ چین کا ادعا ہے کہ مسعود اظہر کے تعلق سے ہندوستان کی درخواست پر رکن ممالک نے مختلف رائے کا اظہار کیا ہے ۔ چینی وزارت خارجہ نے ایک سوال کا تحریری جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی درخواست پر ابھی تک بھی مختلف رائے پائی جاتی ہے ۔ کمیٹی کیلئے اب مزید وقت مل گیا ہے کہ وہ اس تعلق سے تبادلہ خیال کرے ۔ مزید مشاورت کا جو تذکرہ کیا گیا ہے وہ در اصل ہندوستان و پاکستان کے مابین اس مسئلہ پر مزید مشاورت کی سمت حوالہ ہے ۔ چین نے پہلی فنی رکاوٹ چھ ماہ قبل اس وقت پیدا کی تھی جب ہندوستان نے مسعود اظہر پر امتناع کی درخواست دائر کی تھی اور کہا تھا کہ مسعود اظہر پٹھان کوٹ دہشت گردانہ حملہ میں ملوث ہیں۔ چین نے دوسری فنی رکاوٹ کو تین ماہ کی توسیع دیدی ہے اور کہا کہ اس پر مزید مشاورت ہوسکتی ہے ۔ امکان ہے کہ جب وزیراعظم نریندر مودی کی چین کے صدر ژی جن پنگ کے ساتھ 15 – 16 اکٹوبر کو گوا میں برکس چوٹی کانفرنس کے موقع پر ملاقات ہوگی تب اس پر تبادلہ خیال کیا جائیگا ۔ مسعود اظہر پر امتناع کی مخالفت کرتے ہوئے چین کی وزارت خارجہ نے کہا کہ چین ہر طرح کی دہشت گردی کو روکنے اور اس پر قابو پانے کی کوششوں کی تائید و حمایت کرتا ہے ۔ وہ دہشت گردی کے خلاف مستحکم بین الاقوامی تعاون کا بھی حامی ہے ۔ چین ہمیشہ ہی کہتا رہا ہے کہ 1267 کمیٹی میں جو درخواستیں پیش کی جاتی ہیں ان کو قوانین کی مطابقت میں ہونا چاہئے ۔ ہندوستان مسلسل کوشش کر رہا ہے کہ اقوام متحدہ میں جئیش محمد تنظیم کے سربراہ مسعود اظہر پر امتناع عائد کردیا جائے ۔ سابقہ کوشش کو بھی چین نے ناکام بنادیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT