Saturday , July 22 2017
Home / Top Stories / مسلمانوں کو تحفظات میں اضافہ کیلئے عوامی سماعت کا آغاز

مسلمانوں کو تحفظات میں اضافہ کیلئے عوامی سماعت کا آغاز

حیدرآباد اور کریم نگر کے افراد نے نمائندگی کی، پہلے دن حوصلہ افزاء ردِ عمل نہیں رہا

حیدرآباد ۔ 14۔ڈسمبر (سیاست نیوز) مسلمانوں کے پسماندہ طبقات کو تحفظات میں اضافہ کا جائزہ لینے کیلئے تلنگانہ بی سی کمیشن نے آج سے 4 روزہ عوامی سماعت کا آغاز کیا ہے۔ کمیشن کے صدرنشین بی ایس راملو اور ارکان نے تحفظات کے سلسلہ میں مختلف اداروں اور انفرادی نمائندگیوں کی سماعت کی۔ حکومت نے بی سی کمیشن کو ہدایت دی ہے کہ وہ سدھیر کمیشن آف انکوائری کی رپورٹ کی بنیاد پر عوامی سماعت کے ذریعہ سفارشات پیش کریں۔ کمیشن کی عوامی سماعت کے پہلے دن حوصلہ افزاء ردعمل نہیں دیکھا گیا۔ مسلم تحفظات کے لئے جدوجہد کرنے والی ایک تنظیم کے علاوہ شہر اور کریم نگر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کمیشن کے روبرو حاضر ہوکر تحفظات کے حق میں اپنا موقف پیش کیا۔ انہوں نے مسلم تحفظات کے فیصد میں اضافہ کیلئے دستاویزات بھی کمیشن کو پیش کئے۔ کمیشن کے ارکان وی کرشنا موہن ، انجنے گوڑ ، جی گوری شنکر اور سکریٹری جی ڈی ارونا آئی اے ایس اس موقع پر موجود تھیں۔ کمیشن کے صدرنشین بی ایس راملو نے سماعت کے آغاز پر کہا کہ 17 ڈسمبر تک یہ سلسلہ جاری رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ پسماندہ طبقات کو جو تحفظات فراہم کئے گئے ہیں، انہیں متاثر کئے بغیر مسلمانوں کے پسماندہ طبقات کو تعلیم اور روزگار میں تحفظات کی سفارش کرنا کمیشن کا مقصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ سدھیر کمیشن آف انکوائری نے مسلمانوں کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیتے ہوئے حکومت کو جو رپورٹ پیش کی ہے، اسے بی سی کمیشن سے رجوع کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ 18اور 19 ڈسمبر کو ماہرین قانون، یونیورسٹی کے پروفیسرس ، سماجی رہنماؤں اور مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والے قائدین کا اجلاس منعقد کیا جائے گا ۔ آج سماعت کے پہلے دن مسلم ریزرویشن فرنٹ کے صدر محمد افتخار الدین احمد کی قیادت میں نمائندگی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ سدھیر کمیشن نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی سفارش کی ہے۔ فرنٹ کے قائدین نے کمیشن کو بتایا کہ مسلمان ہر شعبہ میں پسماندہ ہیں جس کی اعتراف جسٹس رنگناتھ مشرا کمیشن ، سچر کمیٹی اور دیگر کمیشنوں نے کیا ہے۔ انہوں نے بی سی کمیشن کو اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے مسلمانوں کی صورتحال کا جائزہ لینے کا مشورہ دیا۔ ریزرویشن فرنٹ نے کمیشن سے نمائندگی کی کہ مسلمانوں کے ایسے طبقات جنہیں گزشتہ مرتبہ تحفظات کے دائرہ میں شامل نہیں کیا گیا ، انہیں بھی تحفظات فراہم کئے جائیں۔ کمیشن کے روبرو نمائندگی کرنے والوں میں ٹی این جی اوز کے قائد سید مجید اللہ حسینی ، صحیفہ نگار خواجہ قیوم انور کے علاوہ کریم نگر ضلع کے اقلیتی قائدین عرفان محی الدین ، محمد مشو ، خواجہ امام الدین اور محمد شہباز شامل ہیں۔ عوامی سماعت 17 ڈسمبر تک روزانہ صبح 11 تا5  بجے شام جاری رہے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT