Wednesday , July 26 2017
Home / Top Stories / مسلمانوں کو درپیش طلاق ثلاثہ واحد مسئلہ نہیں : جماعت اسلامی ہند

مسلمانوں کو درپیش طلاق ثلاثہ واحد مسئلہ نہیں : جماعت اسلامی ہند

نئی دہلی ۔ /21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حکومت کی توجہ صرف ’’طلاق ثلاثہ‘‘  کے مسئلہ پر مرکوز ہے ۔ جبکہ مسلمانوں کی دیگر پریشانیوں کو نظرانداز کیا جارہا ہے ۔ جماعت اسلامی ہند نے اعلان کیا کہ ملک گیر سطح پر پرسنل لاء کے بارے میں مسلمانوں کا شعور بیدار کرنے کیلئے مہم کا آغاز کیا جائے گا ۔ برادری کے طبقات کی کثیرتعداد اس کے بارے میں ’’بہت کم معلومات‘‘ رکھتی ہے ۔ جماعت اسلامی ہند نے کہا ہے کہ /23 اپریل تا /7 مئی مسلمانوں کے 5 کروڑ افراد تک ملک گیر سطح میں ربط پیدا کیا جائے گا  ایسا ماحول پیدا کردیا گیا ہے  جیسے طلاق ثلاثہ کے نتیجہ میں خواتین کے ساتھ ناانصافی ہورہی ہے ۔ ایسی صورتحال ابھر آئی ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ مسلمانوں کیلئے اس کے علاوہ کوئی دوسرا پریشان کن مسئلہ نہیں ہے ۔ جماعت اسلامی ہند کے امیر مولانا سید جلال الدین عمری ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے وہ کل ہند مسلم پرسنل لاء بورڈ کے نائب صدر بھی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ایک نشست میں تین طلاق کی کوئی بھی تائید نہیں کرتا لیکن مشکل یہ ہے کہ پرسنل لاز میں ایسی کوئی دفعہ نہیں ہے جس سے خواتین کا استحصال ہوتا ہو ۔ گزشتہ سال 5 کروڑ مسلمان جن میں سے بیشتر خواتین تھیں لاء کمیشن کو ایک درخواست پیش کرچکی ہیں جس میں کہا گیا ہے کہ انہیں پرسنل لاز سے کوئی شکایت نہیں ہے ۔ انہوں نے کمیشن سے کہا کہ انہیں دیگر مسائل درپیش ہیں لیکن ایسا معلوم ہوتا ہے کہ حکومت صرف طلاق ثلاثہ کے مسئلہ پر توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم پرسنل لاز کے بارے میں کئی غلط فہمیاں پائی جاتی ہیں ۔ پریس کانفرنس میں امیر جماعت اسلامی کے ساتھ بورڈ کے رکن محمد جعفر بھی موجود تھے ۔ انہوں نے کہا کہ شعور بیداری پروگرام ایک بڑا پروگرام ہے جس میں 700 عام جلسے اور کئی سمپوزیم ملک کے مختلف علاقوں میں صنفی مساوات کے بارے میں منعقد کئے جائیں گے ۔ اس مہم سے برادری کے ارکان کا شعور بیدار ہونے کا امکان ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT