Wednesday , August 16 2017
Home / اضلاع کی خبریں / مسلمانوں کو مفت کپڑے نہیں، 12 فیصد تحفظات چاہئے

مسلمانوں کو مفت کپڑے نہیں، 12 فیصد تحفظات چاہئے

وعدے پر عمل کرنے حکومت سے مطالبہ، محمد مطاہر حسین مسلم لیگ کا بیان

کاغذنگر ۔ 15 جون (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں کو مائناریٹی اقامتی اسکول نہیں چاہئے اور مسلمانوں کو مفت کپڑے نہیں چاہئے بلکہ حکومت وعدہ کے مطابق تلنگانہ کے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات پر عمل آوری کرے۔ اس بات کا مطالبہ انڈین یونین مسلم لیگ پارٹی تعلقہ کنوینر محمد مطاہر حسین نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے چیف منسٹر انتخابات کے دوران ریاست تلنگانہ کی تشکیل ہونے کے صرف چار مہینوں میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن لگ بھگ 2 سال کا عرصہ گذرجانے کے باوجود مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات پر عمل آوری نہیں کی گئی ہے جو ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی ہے۔ اس لئے چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں اور خصوصاً انڈین یونین مسلم لیگ پارٹی کی جانب سے مطالبہ ہیکہ کے سی آر اپنے وعدہ کے مطابق تلنگانہ کے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات پر عمل کریں۔ انہوں نے ریاستی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ٹی آر ایس صرف وعدہ کے ذریعہ مسلمانوں کو خوش کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ مسلمانوں کو صرف اخباری اعلانات کی ضرورت نہیں ہے بلکہ عملی اقدامات ضروری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات نہیں دیئے گئے تو آنے والے 2019ء کے انتخابات میں ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں کو ایک پلاٹ فارم پر آتے ہوئے سیاسی جواب دینے کیلئے تیاری شروع کرنی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT