Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات دینے کے مطالبہ میں شدت

مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات دینے کے مطالبہ میں شدت

سیاست ۔ مسلم امپاورمنٹ تحریک

جمعیتہ العلماء بھی مہم میں شامل ، اضلاع میں نماز جمعہ کے بعد بڑے پیمانے پر نمائندگیاں

حیدرآباد /11 ستمبر ( سیاست نیوز ) ریاست تلنگانہ میں 12 فیصد مسلم تحفظات کیلئے جاری سیاست کی تحریک اب مساجد سے بھی گونجنے لگی ہے ۔ ملی مذہبی سیاسی و رضاکارانہ تنظیموں سے وابستہ افراد وظیفہ یاب ، ضعیف ، نوجوان نسل خواتین اب اس تحریک سے جٹنے لگے ہیں ۔ بلالحاظ سیاسی پارٹی خود تلنگانہ راشٹرا سمیتی سے وابستہ مسلم قائدین و سیکورلز ذہن افراد نے بھی 12 فیصد مسلم تحفظات کے حق میں اپنا نعرہ بلند کر رہے ہیں ۔ اس دوران مسلمانوں کی غیر سیاسی نمائندہ تنظیم جمعیتہ العلماء ہند تلنگانہ نے سیاست کی تحریک کو اپنی بھرپور تائید کا اعلان کیا ۔ آج نماز جمعہ کے پیش نظر ریاست تلنگانہ کے بیشتر مساجد اور ضلع ہیڈ کوارٹرس کے علاوہ منڈل ہیڈکواٹرس کی بڑی مساجد میں 12 فیصد مسلم تحفظات کا تذکرہ ہوا ۔ نرمل ، کورٹلہ ، کوٹگیر ، مدھول ، نظام آباد میں آج یادداشتیں پیش کی گئی ۔ ضلع عادل آباد کے نرمل ٹاون میں مساجد کمیٹیوں کے ذمہ داران نے تحفظات کی اہمیت پر مسلمانوں کی توجہ مبذول کروائی ۔ 12 فیصد مسلم تحفظات کی اہمیت اور اس سے حاصل ہونے والے نوجوان مسلم نسل کیلئے ایک نعمت سے کم نہیں ۔ قوم کی تعمیر و ترقی کیلئے 12 فیصد تحفظات کافی اہمیت کے حامل ہیں اور تحفظات کے حصول کیلئے روزنامہ سیاست نے جو مہم شروع کی ہے اور جو قانونی پیچیدگیوںپر قوم کا شعور بیدار کرتے ہوئے تحفظات کے لئے جو اقدام کیا ہے تلنگانہ کے ہر ضلع سے اس تحریک کو تعاون حاصل ہو رہا ہے ۔ حکومت تلنگانہ کے وعدہ پر عمل آوری میں تاخیر اور ایک لاکھ سے زائد ملازمتوں پر تقررات کے عمل سے تشویش کا شکار مسلمان اس مہم کو مضبوط کر رہے ہیں ۔ ان ملازمتوں میں 12 فیصد تحفظات کے تحت 12 ہزار سے زائد ملازمتیں مسلمانوں کے حق میں آتی ہیں ۔ تاہم اگر ملازمتوں کے اعلامیہ کے بعد تحفظات ملتے ہیں تو تقریباً 8 ہزار سے زائد ملازمتوں سے مسلمانوں کو محروم ہونا پڑے گا ۔بالخصوص محکمہ پولیس میں قوم کی نمائندگی پر سیاست ایک عرصہ سے خدمات انجام رہا ہے اور اس اہمیت کہ تحت تحریک کو شروع کیا گیا چونکہ ایک لاکھ ملازتوں کے اس موقع کے بعد آئندہ 10 سال تک سرکاری ملازمتوں کا کوئی سلسلہ شروع ہونے کیا مکانات نہیں ہے اور ہر سال میڈیکل اور بی ڈی ایس کی نشستوں میں سینکڑوں نشستوں کا نقصان ہو رہا ہے ۔ مسلمانوں کے حق میں 12 فیصد تحفظات کی اہمیت اور اس کے حصول کیلئے جاری روزنامہ سیاست کی تحریک کا خیرمقدم کرتے ہوئے جمعیتہ العلماء نے سیاست تحریک کی بھرپور تائید کا اعلان کیا ۔ صدر جمعیتہ العلماء تلنگانہ آندھراپردیش حافظ پیر شبیر احمد نے کہا کہ مسلمان پسماندہ طبقات سے بھی پسماندہ ہیں بلکہ وقت کے ساتھ حکومتوں کی جانب سے تشکیل کردہ کمیٹیوں نے اپنی رپورٹس میں مسلمانوں کی پسماندگی کو پیش کیا تاہم اب ایسا موقع ہے کہ مسلمان خود اپنی پسماندگی کو دور کرنے کیلئے جدوجہد دکھائے چونکہ تحریک کابھی آغاز ہوچکا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT