Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہمی میں حکومت ناکام ، کے سی آر کے خلاف دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کریں

مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہمی میں حکومت ناکام ، کے سی آر کے خلاف دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کریں

چیرمین اقلیتی کمیشن جناب عابد رسول خاں سے گریٹر حیدرآباد اقلیتی ڈپارٹمنٹ کے وفد کی ملاقات
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر شیخ عبداللہ سہیل کی قیادت میں کانگریس قائدین کا ایک وفد صدر نشین اقلیتی کمیشن مسٹر عابد رسول خاں سے ملاقات کیا ۔ وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم نہ کرنے پر چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کے خلاف دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔ اس وفد میں جنرل سکریٹری حیدرآباد سٹی کانگریس کمیٹی مسٹر سید نظام الدین سابق کارپوریٹرس مسٹر محمد غوث ، مسٹر معراج محمد کانگریس قائد وجئے کمار نائیڈو اور دیگر دوسرے شامل تھے ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر شیخ عبداللہ سہیل نے کہا کہ 19 اپریل 2014 کو شاد نگر میں ایک انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے ٹی آر ایس کے اقتدار میں آنے کی صورت میں 4 ماہ میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ مسلمانوں کی اکثریت نے کے سی آر پر بھروسہ کرتے ہوئے ٹی آر ایس کو اقتدار حاصل کرنے میں کلیدی رول ادا کیا 23 ماہ مکمل ہونے کے باوجود چیف منسٹر نے مسلمانوں سے کیا گیا وعدہ پورا نہیں کیا لہذا چیف منسٹر تلنگانہ کے خلاف مسلمانوں کو دھوکہ دینے کا مقدمہ درج کیا جائے ۔ مسٹر شیخ عبداللہ سہیل نے کہا کہ مسلمانوں کی معاشی سماجی اور تعلیمی پسماندگی کا جائزہ لینے کے لیے ریٹائرڈ آئی اے ایس آفیسر جی سدھیر کی قیادت میں 3 اپریل 2015 کو ایک انکوائری کمیشن تشکیل دی گئی ہے ۔ یہ کمیشن بے فیض ہے کیونکہ اس کو کوئی قانونی اختیارات نہیں ہے ۔ یہ انکوائری کمیشن مسلمانوں کی تعلیمی اور معاشی پسماندگی پر آنسو پوچھنے کے مترادف ہے اور وقت ضائع کرنے کا حربہ ہے ۔ 6 ماہ کے لیے تشکیل دی گئی انکوائری کمیشن کی میعاد میں 2 مرتبہ توسیع دی گئی ہے ۔ اسمبلی میں چیف منسٹر کے سی آر نے کہا تھا کہ حکومت مسلمانوں سے کئے گئے وعدے کے معاملے میں عہد کی پابند ہے ۔ سدھیر کمیشن کی رپورٹ وصول ہوتے ہی بی سی کمیشن تشکیل دیتے ہوئے اسمبلی میں قرار داد منظور کر کے مرکز کو روانہ کردی جائے گی تاکہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کیا جاسکے ۔ یہ اعلان اس بات کا ثبوت ہے کہ چیف منسٹر نے 12 فیصد مسلم تحفظات کے معاملے میں مسلمانوں سے ووٹ حاصل کرنے کے لیے دھوکہ دہی کی ہے ۔ اس لیے گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ نے اقلیتی کمیشن سے رجوع ہو کر مسلمانوں کو دھوکہ دینے والے چیف منسٹر تلنگانہ کے خلاف دھوکہ دہی کا مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔ صدر نشین اقلیتی کمیشن مسٹر عابد رسول خاں نے ان کی یادداشت پر ہمدردانہ غور کرنے کا تیقن دیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT